مدتوں سے اچھی سمجھی جانے والی 6بری عادات

Healthy Teethچھ بظاہر صحتمند روزمرہ معمولات ایسے ہیں جنہیں ہمیں جلد از جلد بدل دینا چاہئے۔
اشتہارات آپ کو ہاتھ دھونے کے لئے استعمال کئے جانے والے جراثیم کش صابنوں اور محلولوں کے ہاتھ فروخت کرکے رکھ دیتے ہیں۔ لیکن کیا وہ آپ کے لئے واقعی اچھے ہوتے ہیں؟ ماہرین کے دلائل نفی میں ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ کئی عادات ایسی ہیں کہ جنہیں ہم نے سالوں میں پختہ کیا ہے۔ ان میں سے ایک جراثیم سے متعلق محتاط ہو کر ہرکھانے کے بعد دانت برش کرنا ہے جو نہ صرف یہ کہ غیر ضروری ہے بلکہ فی الواقعی ہمیں ایک طویل عرصے کے لئے اچھی صحت سے محروم بھی کر سکتا ہے۔
1۔ کھانوں کے بعد برش کرنا
دانتوں کے ماہرین کہتے ہیں کہ کھانے کے فوراً بعد غسل خانے کی جانب دوڑنا آپ کے دانتوں کے لئے اچھا نہیں ہے۔ جب ہم خوراک کو چباتے ہیں تو کچھ تیزابی باقیات منہ ہی میں رہ جاتی ہیں جو دانتوں پر حفاظتی تہہ کے طور پر موجود سخت بیرونی غلاف کو کمزور کر دیتی ہیں۔ اس وقت برش کرنا کہ جب یہ سخت بیرونی غلاف کمزور ہوتا ہے ، اس کے مستقل طور پر اتر جانے کا باعث بن سکتا ہے۔جس کا نتیجہ دانتوں کی حساسیت ( زیادہ ٹھنڈا یا زیادہ گرم کھانے پینے پر تکلیف محسوس ہونا)کی شکل میں ظاہر ہوتا ہے۔
اس لئے بہتر یہ ہوتا ہے کہ کھانے کے بعد ٹوتھ برش کی طرف جانے سے پہلے کم از کم ایک گھنٹہ انتظار کیا جائے۔ اگر آپ ان غذائی اجزاء کو نکالنا چاہتے ہیں جو کھانے کے بعد بچ جاتے ہیں تو اپنے منہ کو پانی سے دھولیں(غرغرے یا کلیاں کر لیں)۔
2۔ ہاتھ دھونے کیلئے جراثیم کش محلول استعمال کرنا
اگر ممکن ہوتو صابن اور پانی سے ہاتھ دھونے کا برسوں کا آزمودہ طریقہ استعمال کریں۔جراثیم کش محلولوں کا استعمال بالکل ترک کر دیں کیونکہ ماہرین اسے صٖفائی کا غیر مؤثرطریقہ قرار دے چکے ہیں۔
3۔ دل کے تحفظ کے لئے وزن اٹھانا ترک کر نا
اگرآپ زیادہ وقت گھر سے باہر گزارنے والے شخص ہیں اور جم جانا پسند نہیں کرتے تو پھر ایک بینچ اور مگھروں کا ایک جوڑا تلاش کریں ۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ’’آغاز کرنے والوں کے لئے بس اتنا ہی کافی ہے کہ ان کے جسم کا بلائی حصہ کام کرے۔‘‘ اگر دل کے مریض ہر قسم کا کام کرنے اور معمولی سے معمولی وزن اٹھانے سے بھی گریزکرنا شروع کر دیں گے تو عین ممکن ہے کہ ان کے پٹھے مکمل طور پر کام کرنا چھوڑ دیں اور ورزش کا مفقود ہو جانا انہیں موٹاپے کا شکار کر دے۔
4۔ میک اپ کے سامان کی تبدیلی
ماہرین امراض جلد زور دیتے ہیں کہ میک اپ کیلئے صرف قابل بھروسہ برینڈز استعمال کریں اور ان مصنوعات پر درج پی ایچ کی قیمت ضرور پڑھیں۔
5۔ عقبی سہارا نہ رکھنے والے سینڈل پہننا
جب آپ گھر پر ہوں تو عقبی سہارے سے مبرا ربڑ اور فوم سے بنے ایسے سینڈل پہنیں جن میں انگوٹھوں اور انگلیوں کے درمیان وی شکل کا سٹریپ ہوتاہے۔لیکن جب گھر سے باہر جانے لگیں تو انہیں اتار دیں۔گھر سے باہر طویل واک کرنے کے لئے ایڑی والا جوتا زیادہ بہتر رہتاہے کیونکہ اس کی پاؤں پر گرفت مضبوط ہوتی ہے۔
6۔ صرف بوتل سے پانی پینا
بوتلوں میں بند بازار سے خریدا ہواپانی مشینوں پر پراسیس کیا گیا ہوتا ہے اور اس سے دھاتی اجزاء نکال دئیے گئے ہوتے ہیں۔ اس کے استعمال کے نتیجے میں آپ کا جسم کیلشیم، پوٹاشیم، سلیکا اور سلفیٹ جیسے اہم دھاتی اجزاء کی کمی کا شکار ہو سکتا ہے۔ لہٰذا، آپ کے
لئے بہتر یہ ہو گا کہ یا تو گھر سے نکلنے سے پہلے ایک بوتل میں صاف پانی ساتھ لے لیا کریں اور یا پھر اس بات کو یقینی بنائیں کہ ہمیشہ ایک فلٹر سسٹم کا فلٹر کردہ پانی گلاس میں ڈال کر پیئیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *