وقت پڑا تو ہندوستان کے خلاف ایٹم بم استعمال کیا جا سکتا ہے، پرویز مشرف

musharafپاکستان کے سابق صدر اور آل پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ جنرل (ر) پرویز مشرف نے کہا ہے کہ ضرورت پڑنے پر ہندوستان کےخلاف ایٹم بم بھی استعمال کرسکتے ہیں۔ ہماری فوج میں نہ صرف بھارتی فوج کو روکنےکی صلاحیت موجود ہے بلکہ ہم ان کو شکست بھی دے سکتے ہیں۔
سابق صدر جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف نے ہندوستان کے ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان ہمیشہ سے ہندوستان کی جانب سے در پیش خطرے سے نمٹنے کے لیے ہمیشہ مستعد رہا ہے اسی لیے ملک کی مشرقی سرحدوں کی حفاظت سے کبھی غافل نہیں ہوں گے۔ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم نریندر مودی پاکستان اور مسلمانوں کو دشمن ہے ان کویہ رویہ بدلنا ہوگا۔انہوں نے انٹرویو میں یہ بھی کہا کہ پراکسی وار کے ذریعے دہلی پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ مودی کے وزیر اعظم بننے کے بعد ایل او سی پر کشیدگی پیدا ہوئی،پاکستان کے وزیر اعظم کو نئی دلی میں حریت رہنماؤں سے ملنا چاہیے تھا، نریندر مودی نے کوئی ریڈ لائن بنائی ہے تو قبول نہیں کیونکہ مودی ہندوستان کے وزیر اعظم ہیں پاکستان ان کی ’ریڈ لائنز‘ کا پابند نہیں ہے۔
مشرف نے یہ بھی کہا کہ اگر بھارت بلوچستان میں کارروائی کرے گا تو ہم کشمیر میں کر سکتے ہیں، پاکستان کشمیری بھائیوں کو بھڑکا سکتا ہے لیکن بھڑکاتا نہیں ہے۔ سابق صدر نے کہا کہ ہندوستان میں ’گھس بیٹھیا‘ کہا جاتا ہے انہیں پاکستان میں عزت سے دیکھا جاتا ہے، کشمیر کے لوگ خود اپنی لڑائی لڑ رہے ہیںِ۔
واضح رہے کہ حالیہ دنوں میں پاکستان اور ہندوستان میں سرحد پر جھڑپیں ہوئی ہیں جس میں سویلین آباد کو نشانہ بنایا گیا تھا اور دونوں جانب جانی اور مالی نقصان ہوا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *