سینٹ الیکشن: 52 نشستوں کے لیے 182 امیدوار مدمقابل

Pakistan-Senateالیکشن کمیشن آف پاکستان نے سینیٹ کی 52 نشستوں پر ہونے والے انتخابات کے لیے 182 امیدواروں کے ناموں کا اعلان کردیا۔
ای سی پی کے مطابق وفاق کے زیرانتظام قبائلی علاقہ جات کی چار نشستوں کے لیے 42 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہوگا جن میں سے مسلم لیگ ن کے ثناءاللہ خان کے علاوہ سب آزاد امیدوار ہیں جن میں وزیر برائے ٹیکسٹائل انڈسٹری سییٹر عباس خان آفریدی، سابق ایم این ایز اخوندزادہ چٹان، منیر خان اورکزئی ، مولانا عبدالمالک وزیر اور سینیٹر ملک رشید احمد خان شامل ہیں۔
اسلام آباد سے سینیٹ کی نشست کے لیے اقبال ظفر جھگڑا اور چوہدری اشرف گجر (مسلم لیگ نواز)، راجا عمران اشرف (پی پی پی) اور سید ذوالفقار علی (ایم کیو ایم) نے جنرل نشست جبکہ راحیلہ مگسی اور نرگس ناصر (ن لیگ)، شمائلہ شہاب اور بسمہ آصف (ایم کیو ایم) اور نرگس فیض ملک (پی پی پی) نے خواتین کی مخصوص نشست کے لیے کاغذات نامزدگی داخل کرائے ہیں۔
پنجاب سے سات جنرل نشستوں، خواتین اور ٹیکنو کریٹ کی دو، دو نشستوں کے لیے 23 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہوگا۔وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر پرویز رشید، مشاہد اللہ خان، لیفٹننٹ جنرل ریٹائرڈ عبدالقیوم، چوہدری تنویر خان، سید نہال ہاشمی، سعود مجید، خواجہ محمود احمد اور سلیم ضیاءجنرل نشستوں کے لیے مسلم لیگ نواز کے امیدوار ہیں۔اسی طرح پیپلزپارٹی کے دو اور چار آزاد امیدواروں نے بھی جنرل نشستوں کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں۔نجمہ حمید، عائشہ رضا فاروق اور کرن عمران (نواز لیگ) اور ثروت ملک (پی پی پی) خواتین کی نشستوں کے لیے آپس میں ٹکرائیں گے۔راجا ظفر الحق اور پروفیسر ساجد میر مسلم لیگ ن کی جانب سے ٹیکنوکریٹس کے لیے مختص دو نشستوں کے لیے امیدوار ہیں جن کا مقابلہ ملک نوشیر خان لنگڑیال (پی پی پی) اور ملک عبدالرحمان (آزاد) سے ہوگا۔
سندھ سے سابق وزیر داخلہ رحمان ملک، سابق وزیر خزانہ سلیم مانڈوی والا، اسلام الدین شیخ، عبدالطیف انصاری، گیان چند اور سرفراز راجا (پی پی پی)، وسیم اختر، گل فراز خان، خوش بخت شجاعت، مسز نگہت مرزا، رضا زیدی، میاں عتیق شیخ اور بابر غوری (ایم کیو ایم)، امام الدین شوقین اور محمد بخش (مسلم لیگ فنکشنل) جبکہ ظفر علی شاہ (نواز لیگ) نے سات جنرل نشستوں کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں۔خواتین کی دو مخصوص نشستوں کے لیے سسی پلیجو اور شمع عارف (پی پی پی)، خوش بخت شجاعت، نگہت مرزا، سیما زرمین اور مسز تحسین مشکور عابدی (ایم کیو ایم) امیدوار ہیں۔سابق وزیر قانون فاروق ایچ نائیک اور رحمان ملک (پی پی پی)، ڈاکٹر عبدالقدیر خانزادہ اور محمد علی خان سیف (ایم کیو ایم) نے ٹیکنو کریٹس کے لیے مختص دو نشستوں کے لیے کاغذات جمع کرائے ہیں۔
خیبر پختونخوا کی سات جنرل نشستوں پر جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق سمیت سترہ امیدوار میدان میں ہیں۔سراج الحق کے علاوہ دیگر امیدواروں میں وقار احمد خان اور عمار احمد خان (آزاد)، حاجی محمد عدیل (اے این پی)، اطہر الرحمان اور منظور خان (جے یو آئی ف)، محمد ابراہیم خان (جماعت اسلامی)، لیفٹننٹ جنرل ریٹائرڈ صلاح الدین ترمذی (نواز لیگ)، خانزادہ خان اور نور عالم خان (پی پی پی)، فضل محمد خان، شبلی فراز، سلمان حامد آفریدی شامل ہیں۔خواتین کے لیے مختص دو نشستوں کے لیے ثمینہ عابد اور رابعہ بصری (پی ٹی آئی)، بی بی شفا (جے یو آئی ف)، شاہین (نواز لیگ)، فوزیہ فخرالزمان خان اور شازیہ خان (آزاد) نے کاغذات جمع کرائے ہیں۔ٹیکنو کریٹس کی نشستوں کے لیے نو جبکہ غیر مسلموں کے لیے مختص ایک نشست پر چار امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہوگا۔
بلوچستان سے انیس امیدواروں نے سات جنرل نشستوں جبکہ چھ نے خواتین کے لیے مختص نشستوں پر کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں۔اسی طرح ٹیکنو کریٹس کی دو نشستوں کے لیے نو جبکہ غیرمسلموں کی ایک نشست کے لیے آٹھ امیدواروں ایک دوسرے کے مدمقابل آئیں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *