بھارت: مسلمانوں کی آبادی بڑھنے کی رفتار میں کمی

بھارت میں سرکاری اعدادوشمار کے مطابق 2001ء سے2011ء کے درمیان دس برس میں مسلمانوں کی آبادی بڑھنے کی رفتار میں پانچ فیصدindian کمی آئی ہے۔

 2001ء میں مسلمانوں کی آبادی میں 29 فیصد کی شرح سے اضافہ ہو رہا تھا اور 2011ء تک یہ شرح کم ہو کر 24 فیصد پر آ گئی۔

وزارت داخلہ نے  2011ء کی مردم شماری کے اعداد و شمار ابھی تک باضابطہ طور پر جاری نہیں کیے ہیں لیکن جو تفصیلات سامنے آئی ہیں ان کے مطابق ملک کی اوسط شرح پیدائش 18 فیصد ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق بھارت میں مسلمانوں کی آبادی بڑھ کر تقریباً 18 کروڑ ہو گئی ہے جو کہ مجموعی آبادی کا 14.2 فیصد ہے۔

ملک میں ہندوؤں کی آبادی اس مدت میں معمولی سی کمی کے ساتھ 80 فیصد سے نیچے آ گئی ہے۔

خیال رہے کہ سنہ 1991 سے مسلمانوں کی آبادی میں اضافے کی رفتار میں مسلسل گراوٹ آ رہی ہے۔

سنہ 1991 میں جو شرح 32.2 فیصد تھی وہ سنہ 2001 میں 29 فیصد پر آئی اور سنہ 2011 میں یہ مزید کم ہو کر 24 فیصد پر پہنچ گئی ہے۔

اگر یہ رجحان جاری رہا تو سنہ 2021 کی مردم شماری تک مسلمانوں کی آبادی میں اضافے کی رفتار موجودہ قومی رفتار یعنی 18 فیصد سے نیچے جا سکتی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *