پاکستان میں توانائی بحران ماضی کا قصہ بن چکا ہے: وزیراعظم

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی انٹرنیشنل میری ٹائم سمپوزیم سے خطاب کر رہے ہیں۔ فوٹو: پی آئی ڈی

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاکستان میں توانائی کا بحران اب ماضی کا حصہ بن چکا ہے۔

اسلام آباد میں انٹرنیشنل انویسٹمنٹ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ 2025 تک پاکستان میں توانائی سرپلس میں ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ اب توانائی کی قیمتوں میں کمی کا مسئلہ حل کریں گے۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ موجودہ حکومت میں معیشت کو آزاد کیا گیا اور ٹیکسوں میں کمی کی گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک میں ٹیکس نیٹ بڑھایا گیا، غربت میں کمی کے لیے جی ڈی پی گروتھ کو 7 فیصد تک لانا ہو گا۔

بعد ازاں بحریہ یونیورسٹی اسلام آباد میں انٹرنیشنل میری ٹائم سمپوزیم سے خطاب کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ خطے کی ترقی کے لیے سی پیک جیسے منصوبے بنانا ہوں گے۔

وزیراعظم نے کہا ہے کہ موجودہ حالات میں سمپوزیم کا انعقاد بہت اہم ہے اور سی پیک کو کامیاب بنانے کے لیے ہمیں چین کے ساتھ مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دنیا کی 80 فیصد تجارت سمندر سے ہوتی ہے اور پاکستان سے منسلک تجارتی خطہ دنیا کا 40 فیصد ہے۔

انہوں نے کہا کہ جغرافیائی حیثیت سے استفادہ حاصل کرنے کے لیے اقدامات ضروری ہیں جب کہ پاکستان وسط ایشیائی ریاستوں کو تجارتی رسائی دے سکتا ہے۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ہمارا خطہ توانائی اور قدرتی وسائل سے مالا مال ہے اور ہمیں جغرافیائی حیثیت کو روابط کے لیے استعمال کیا جانا چاہیے۔

پاکستان میں توانائی بحران ماضی کا قصہ بن چکا ہے: وزیراعظم” پر ایک تبصرہ

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *