پی ایس ایل: کوئٹہ گلیڈی ایٹرز فائنل میں، واٹسن ہیرو

پی ایس ایل فور: سنسنی خیز مقابلے کے بعد کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی ٹیم فائنل میں، شین واٹسن میچ کے ہیرو ثابت

پاکستان سپر لیگ فور کے فائنل میں کوالیفائی کرنے کے لیے ایک بار پھر پی ایس ایل کی دو کامیاب ترین ٹیموں کا ٹاکرا کراچی کے نیشنل سٹیڈیم میں ہوا جہاں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد 186 رنز کا دفاع کرتے ہوئے پشاور زلمی کو 10 رنز سے ہرا دیا۔

میچ کے آخری اوور میں پشاور زلمی کو جیت کے لیے 21 رنز کی ضرورت تھی اور ان کے تمام ریگولر بولرز کے اوور ختم ہو گئے تھے۔ ڈوائن براوو کو 19ویں اوور میں 14 رنز پڑے تھے اور محسوس ہو رہا تھا کہ بولر کی کمی گلیڈی ایٹرز کو شاید مہنگی پڑ جائے گی۔

اس موقع پر جب زلمی کے کپتان ڈیرن سیمی اور کیئرون پولارڈ دھواں دھار بیٹنگ کر رہے تھے تو اس وقت کوئٹہ کے سینئیر کھلاڑی شین واٹسن نے بولنگ کی ذمہ داری اٹھائی اور ایک سال بعد گیند کرانے آئے اور اپنی ٹیم کے سکور کا دفاع کیا۔

کرکٹ

شین واٹسن میچ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے

بیٹنگ کرتے ہوئے 71 رنز بنانے اور آخری اوور میں سکور کا دفاع کرنے پر شین واٹسن کو مین آف دا میچ کا اعزاز ملا۔

میچ کے آخری اوور کے آغاز سے قبل کریز پر کئیرون پولارڈ 38 رنز پر اور ڈیرن سیمی 45 پر کھیل رہے تھے اور ان دونوں نے 36 گیندوں پر 83 رنز کی شراکت جوڑی۔

واٹسن کی پہلی گیند پر سیمی نے سنگل لیا اور اس کے بعد پولارڈ نے ایک بلند و بالا چھکا مارا۔

لیکن اگلی ہی گیند پر پولارڈ کو واٹسن نے بولڈ کر دیا اور پھر سیمی بھی رن آؤٹ ہو گئے جس کے بعد کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی فائنل میں رسائی یقینی ہوگئی۔

یہ تیسرا موقع ہوگا جب کوئٹہ فائنل میں کھیلے گی۔

کرکٹ

محمد نواز نے صہیب مقصود کو آؤٹ کر دیا

سہیل تنویر کی جانب سے پھینکے گئے 15ویں اوور میں پشاور زلمی کے بلے بازوں نے 17 رنز لوٹ لیے۔

اس کے بعد 16ویں اوور میں بھی ان دونوں ویسٹ انڈین بیٹس مینوں نے 22 رنز حاصل کر لیے۔ 17ویں اوور میں حسنین کو بھی 14 رنز پڑگئے۔

دسویں اوور میں کوئٹہ کی بولنگ کو ایک دھچکہ پہنچا جب اپنا دوسرا اوور کرانے والے فواد احمد کی گیند پر امام الحق نے زوردار شاٹ مارا جسے بولر روک نے سکے اور گیند ان کے چہرے پر لگی اور انھیں گراؤنڈ سے جانا پڑ گیا۔

لیکن قسمت نے کوئٹہ کی یاوری کی اور فواد کے بدلے میں بولنگ کرنے والے رائلی روسو نے پہلی ہی گیند پر امام الحق کو بولڈ کر دیا جنھوں نے 23 رنز بنائے۔

چوتھے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی لئیم ڈاوسن تھے جو اپنا پہلا اوور کرانے والے احسن علی کی ایک نہایت معمولی گیند پر پانچ رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہو گئے۔

مصباح الحق کو حسنین نے زبردست گیند کرا کر ایل بی ڈبلیو کر دیا اور اگلی ہی گیند پر سیمی کو گیند سے زخمی کر دیا لیکن زلمی کے کپتان نے بیٹنگ جاری رکھی ہے۔

کرکٹ

کامران اکمل اور امام الحق نے زلمی کی اننگز شروع کی

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے محمد نواز نے پہلا اوور کرایا جن کے اوور میں دو چوکے لگے اور ایک ایل بی ڈبلیو کی اپیل ہوئی جس پر ان کی ٹیم کا ریویو بھی ضائع ہوگیا۔

دوسرے اوور میں سہیل تنویر آئے تو امام الحق نے ان کو بھی دو چوکے لگائے۔

کپتان سرفراز احمد نے اس کے بعد اپنے تیز ترین اور ابھرتے ہوئے فاسٹ بولر محمد حسنین کو بلایا لیکن امام الحق نے ان کے اوور میں بھی آٹھ رنز بنا لیے۔

چھٹے اوور میں محمد حسنین نے تیز فل ٹاس کرائی جسے کامران اکمل باؤنڈری کے باہر نہ پہنچا سکے اور رائلی روسو نے اچھا کیچ لیا۔ انھوں نے 22 رنز بنائے۔

پشاور زلمی کے دوسرے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی صہیب مقصود تھے جو محمد نواز کی گیند پر ان ہی کو کیچ دے بیٹھے۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی اننگز

کرکٹ

واٹسن نے پی ایس ایل میں اپنی چوتھی نصف سنچری بنا لی

اس سے قبل جب کوئٹہ نے اپنی اننگز شروع کی تو دوسرے ہی اوور میں ٹائمل ملز نے اپنی پہلی گیند پر احمد شہزاد کو ایک رن پر بولڈ کر دیا لیکن اس کے بعد آنے والے احسن علی نے اوور کے آخری اوور میں چوکا لگا کر کوئٹہ کی پہلی باؤنڈری سکور کی۔

تیسرے اوور میں شین واٹسن اور احسن علی نے حسن علی کی گیند پر جارحانہ انداز اپنایا اور اوور میں 19 رنز بٹور لیے۔

کوئٹہ کی ٹیم نے پانچویں اوور میں اپنی نصف سنچری مکمل کر لی۔

واٹسن کی جانب سے تیز بیٹنگ کا سلسلہ جاری رہا اور انھوں نے آٹھویں اوور میں اپنی پی ایس ایل فور کی چوتھی نصف سنچری مکمل کر لی۔

میچ کے 11ویں اوور میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی ٹیم نے نہ صرف اپنے سو رنز بھی مکمل کر لیے بلکہ واٹسن اور احسن علی کی شراکت کی بھی سنچری مکمل ہو گئی۔

ثمین گل کے تیسرے اوور میں ان دونوں میں 17 رنز حاصل کیے جبکہ اس سے قبل لیم ڈاسن نے دو اوورز میں 27 رنز دیے ہیں۔

کرکٹ

احسن علی نے 46 رنز بنائے

میچ کے 12ویں اوور میں زلمی کے کپتان ڈیرن سیمی نے اپنے تیز ترین بولر وہاب ریاض کو ان کے دوسرے اوور کے لیے بلایا جنھوں نے بالآخر گلیڈی ایٹرز کے بہترین بلے باز شین واٹسن کو 71 رنز پر بولڈ کر دیا۔ واٹسن نے 43 گیندوں کا سامنا کیا اور پانچ چوکے اور چھ چھکے لگائے۔

شین واٹسن کا ساتھ دینے والے احسن علی نے 14ویں اوور کا آغاز چھکے سے کیا لیکن دو گیند بعد ثمین گل نے انھیں 46 رنز پر ایل بی ڈبلیو کر دیا۔

کوئٹہ کی اننگز واٹسن کے آؤٹ ہونے کے بعد لڑکھڑا گئی اور لگاتار دو اوورز میں ان کے دو کھلاڑی آؤٹ ہو گئے جب احسن علی کے بعد رائلی روسو بھی اگلے اوور میں 11 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے۔

آخری مرحلے میں پشاور کی جانب سے ٹائمل ملز اور وہاب ریاض نے بہت عمدہ بولنگ کی اور یکے بعد دیگرے وکٹیں حاصل کیں لیکن اننگز کے آخری اوور میں براوو نے دو چوکے لگا کر کوئٹہ کو ایک بڑا ہدف دفاع کرنے کے لیے دے دیا۔

کرکٹ

ٹائمل ملز نے اپنی پہلی گیند پر احمد شہزاد کو آؤٹ کر دیا

اب تک کے چار پی ایس ایل ٹورنامنٹس میں سے تین میں لیگ مرحلے کے بعد پہلی اور دوسری پوزیشنز بالترتیب پشاور اور کوئٹہ کی رہی ہیں۔

لیکن اس سال ہونے والی پی ایس ایل میں ان ٹیموں کے درمیان ہونے والے دونوں مقابلے کوئٹہ کی ٹیم نے جیتے۔

کرکٹ کے اعداد و شمار پر گہری نظر رکھنے والے مظہر ارشد نے ٹویٹ کرتے ہوئے بتایا کہ ماضی میں کوالیفائر اور الیمینیٹر مرحلے میں ان دونوں ٹیموں نے تین بار مقابلہ کیا ہے اور ہر بار جیتنے والی ٹیم کا مارجن ایک رن تھا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *