مطلوبہ ملزمان کے بچپن کی تصاویر کے پوسٹر چھاپنے پر پولیس پر تنقید

بیجنگ: چینی پولیس کی جانب سے انتہائی مطلوبہ ملزمان کی تلاش کے لیے پوسٹر پر ان کے بچپن اور لڑکپن کی تصاویر لگانے پر تنقید کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

جین کے صوبے یونان کے علاقے زین شوئنگ پولیس کو جب اپنی غلطی کا احساس ہوا تو اس نے اپنے عمل پر معافی مانگی ہے جس میں ایک 17 سالہ مطلوبہ مجرم کے بچپن کی تصویر پوسٹر کی صورت میں چسپاں کردی گئی تھی۔ تاہم پولیس نے کہا ہے کہ اسے مطلوبہ نوجوان کی تازہ تصویر نہیں مل سکی تھی۔

اوپر دی گئی تصویر میں جو بچہ دکھائی دے رہا ہے سوشل میڈیا پر لوگوں نے اس پر دل جلاتے ہوئے کہا ہے کہ گلگلے رخسار والا یہ بچہ آخر کسطرح ایک عادی مجرم ہوسکتا ہے؟ اس بچے کا نام جی چنگھائی ہے لیکن پولیس کے مطابق اب اس کی عمر 17 برس ہوچکی ہے اور یہ ایک عرصے سے مطلوب ہے۔ پولیس کے مطابق اب یہ ایک خوفناک مجرم ہے جس کی وارداتوں کی فہرست بہت طویل ہے۔

جی چنگھائی کی تصویر 19 مارچ کو محکمہ پولیس نے جاری کی تھی جس کے بعد سوشل میڈیا پر اس عمل کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ تاہم 20 مارچ کو ہی پولیس نے اپنے اس عمل پر عوام سے معافی مانگ لی تھی۔ پولیس کا بار بار یہی مؤقف تھا کہ اس کے پاس اشتہاری مجرم کی تصویر موجود نہیں ہے اور شاید اس کے خدوخال کو دیکھتے ہوئے اب اسے شناخت کرنا ممکن ہوگا۔

تاہم اس وقت تک چینی سوشل میڈیا مثلاً وائبو اور وی چیٹ پر یہ تصویر مشہور ہوچکی تھیں۔ ساتھ ہی مزید دو تصاویر بھی گردش کرنے لگیں جو دو ملزمان کے بچپن کی تصاویر تھیں۔ تاہم یہ تصاویر بھی بعد میں ہٹادی گئی تھیں۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *