پاک بھارت تعلقات کی بہتری میرے ایجنڈے میں سرفہرست ہے، بان کی مون

bankiاقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بان کی مون نے جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر نواز شریف منموہن ممکنہ ملاقات کا خیر مقدم کیا ہے، ان کا کہناہے کہ پاک بھارت تعلقات کی بہتری میرے ایجنڈے میں سرفہرست ہے اور وہ آئندہ بھی دونوں ممالک کے تعلقات کی بہتری کیلئے تعاون جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ پاک بھارت مذاکرات کی حمایت کرتے ہیں ،پاک بھارت لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزیوں اور فائرنگ کے واقعات پر تشویش ہے۔ انہوں نےامید ظاہر کی کہ آئندہ ہفتے جنرل اسمبلی اجلاس کے موقع پر پاک بھارت وزرائے اعظم ایل او سی پر کشیدگی اور مسئلہ کشمیر کا حل نکال لیں گے۔ نیویارک میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے سکریٹری جنرل بان کی مون نے کہا کہ وہ پاکستان اور بھارت کے درمیان لائن آف کنٹرول پر حالیہ کشیدگی پر تشویش میں مبتلا تھے، دونوں ممالک کو بات چیت کے ذریعے لائن آف کنٹرول پر جاری کشیدگی کیساتھ ساتھ مسئلہ کشمیر پر بھی مذاکرات کرنا چاہیئں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کے68 ویں اجلاس کے موقع پر منموہن، نواز ملاقات کا بھرپور خیر مقدم کریں گے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ پاک بھارت وزرائے اعظم جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر ملاقات میں تنازعات کا حل نکال لیں گے۔ بان کی مون نے کہا کہ انہوں نے نواز شریف کو جنرل اسمبلی کے اجلاس سے بھرپور فائدہ اٹھانے کی تجویز دی تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ آئندہ بھی پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات کیلئے کوششیں کرتے رہیں گے۔ وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے اپنے عہدے کا حلف اٹھانے کے بعد یہ دونوں رہنمائوں کی پہلی ملاقات ہوگی۔انہوں نے مزید کہا کہ اپنے دورئہ پاکستان کے دوران پاکستان اور بھارت کے تعلقات کو بہتر بنانا ان کے ایجنڈے کا اہم جز تھا اورمیں نے اس موقع پر کہا تھا کہ بھارت اور پاکستان دونوں ہی اہم ممالک ہیں۔ واضح رہے کہ پاکستان اور بھارت کے وزرائے اعظم کے درمیان اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر ملاقات متوقع ہے، جس سے دونوں ممالک کے درمیان لائن آف کنٹرول پر جاری کشیدگی میں کمی کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *