دانتوں کی حفاظت

smile teethدانت آپ کے چہرے کا اہم حصہ ہیں چاہے ٹیڑھے میڑھے ہوں یا قطار در قطار۔ ان کی حفاظت اتنی ہی اہم ہے جتنی کہ چہرے کی۔ جب آپ مسکراتے ہیں تو دانت آپ کی مسکراہٹ میں اضافہ کرتے ہیں۔ مسکرانے سے دوران خون میں تیزی آتی ہے جس سے نہ صرف آپ کے چہرے کی رنگت نکھرتی ہے بلکہ دانتوں کی ہڈیاں بھی مضبوط ہوتی ہیں۔دانتوں کی تکالیف میں عموماًدانت کو ہی سرے سے غائب کر دیا جاتا ہے ۔ نہ رہے گا بانس نہ بجے کی بانسری۔ لیکن کیا یہ صحیح حل ہے؟
دانتوں کی حفاظت کے لئے آپ کو زیادہ محنت نہیں کرنا پڑتی۔ اگر آپ کو دانت میں درد ہو خصوصاً عقل داڑھ میں تو اول تو فوراً ڈاکٹر سے رجوع کریں لیکن آپ کے علاقے میں ڈاکٹر موجود نہیں ہے یا آپ کو درد ایسے وقت میں ہو رہا ہے جب باقی دنیا سورہی ہے تب آپ گھر میں موجود اشیاء سے درد بھگا سکتے ہیں۔
حکما کے نزدیک پیاز چبانے سے دانت مضبوط ہوتے ہیں ۔ پیاز تو عموماً ہر گھر میں ہوتا ہے تو اگر آپ کو دانت میں درد ہو رہا ہے تو پین کِلر لینے کی بجائے پیاز چبائیں اور کوشش کریں پیاز کا رس متاثرہ حصے پر زیادہ دیر رہے۔ اور اگر اپ کے پاس سل بٹا یا گرائینڈر ہے تو بہت بڑھیا، پیاز کا رس نکال کر اس میں حسب زائقہ نمک ملائیں اور کلیاں کریں۔ کلی کے دوران خیال رہے رس متاثرہ حصے تک زیادہ دیر رہے۔
اگر پیاز موجود نہیں ہے یا آپ کو پیاز کے رس کا ذائقہ پسند نہیں تو کوئی مسئلہ نہیں۔
صرف نمک کو متاثرہ حصے پر رکھیں۔ درد دم دبا کر بھاگ جائے گا۔
بہت سے لوگوں کے گھروں میں امرود کے درخت ہوتے ہیں اور وہ شکنجوین کے بھی شوقین ہوتے ہیں اس لئے ریفریجریٹر میں لیموں کی بھرمار ہوتی ہے۔ خیر اگر آپ کے دانت میں درد ہورہا ہے، آپ کے ریفریجریٹر میں لیموں ہیں اور آپ کے گھر میں امرود کا درخت بھی موجود ہے، تو امرود کے چند پتے توڑیں، انہیں گرم ابلتے پانی میں ڈالیں پانی کو دو سے تین منٹ تک پکائیں ، پھر اس میں لیموں کا رس ملائیں اور حسب زائقہ نمک ملا کر پانی کی کلیاں کریں۔درد جاتا رہے گا۔
دانت کے درد میں اسپرین کا استعمال ہر گز نہ کریں۔ اسپرین آپ کے ٹشوز کو جلاتا ہے ۔اسپرین سے آپ کے دانت کا درد ختم ہو جاتا ہے لیکن یہ خطرناک ہے کیونکہ ٹشوز کی موجودگی آپ کو الرٹ کرتی ہے کہ پرابلم کیااور کہاں ہے۔
اگر آپ ایک کپ دودھ میں ہلدی ایک چٹکی ملا کر پئیں تو اس سے بھی درد جاتا رہے گا۔
لہسن کا جوا چبانے سے بھی درد ختم ہو جاتا ہے۔
دانتوں کی حفاظت اور خوبصورتی کے لئے سال میں دو مرتبہ ڈاکٹر کو ضرور چیک اپ کروائیں۔ کھانے کے فوراً بعد کلی لازمی کریں اس سے آپ کے دانتوں میں موجود ذرات نکل جاتے ہیں، فلاس سے بھی دانتوں کے بیچ پھنسے زرات نکل جاتے ہیں ۔
دن میں دو مرتبہ فلورائیڈ والی ٹوتھ پیسٹ اور نرم ڈینٹیکل والے ٹوتھ برش سے دانت صاف کریں۔
ہفتے میں ایک بار چنبیلی کی پتیوں سے بنے قہوے سے کلیاں کریں آپکے دانتوں کو کیڑا بھولے سے بھی نہیں لگے گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *