بھارت میں پانچ سالہ بچے کی ’قربانی‘

babyبھارتی ریاست آندھرا پردیش میں پانچ سال کے ایک بچے کی ’قربانی‘ دیے جانے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔

ضلع پركاسم کے پوكرو گاؤں میں بدھ کو بچے کے قتل کے بعد گاؤں والوں نے مشتبہ شخص کو مارنے پیٹنے کے بعد اسے آگ لگا دی۔

25 سال کے ایک مشتبہ شخص نے بچے کو اس وقت اٹھا لیا تھا جب وہ سکول سے آنے کے بعد اپنے دوستوں کے ساتھ باہر کھیل رہا تھا۔

پھر اس شخص نے بچّے کا گلا کاٹ کر اس کے خون کو اپنے گھر میں چھڑک دیا۔

پركاسم ضلع کے ایس پی سی ایچ سری کانت نے بی بی سی کو بتایا بچے کے ساتھ کھیلنے والے ایک دوست نے فوری طور پر اس کی ماں کو بتایا کہ یہ شخص بچے کو لے گیا ہے۔ جیسے ہی والدین مشتبہ شخص کےگھر پہنچے تو وہاں اس کی لاش پڑی ہوئی دیکھی اور گاوں والے دیگر مشتبہ شخص کو تلاش شروع کر دی۔

ایس پی سی ایچ سری کانت نے کہا ’مشتبہ شخص دوسرے گاؤں کی طرف جا رہا تھا تبھی گاؤں والوں نے اسے پکڑ کر مارا پیٹا اور پھر مٹی کا تیل چھڑک کر اسے آگ لگا دی۔‘

پولیس کے مطابق مشتبہ شخص 70 فیصد جل چکا ہے اور اسے ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ یہ شخص ایک شام پہلے بھی ڈیڑھ سال کی ایک بچی کو لے کر گیا تھا جسے گاؤں والوں نے اس سے چھین لیا تھا۔

پولیس نے مشتبہ شخص کے خلاف مرد بچے کی قربانی کی نیت سے کیے گئے قتل کا مقدمہ درج کیا ہے۔

گاؤں والوں کے خلاف بھی مشتبہ شخص کو جلانے کے الزام میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

مشتبہ شخص کا نام راؤ بتایا جا رہا ہے اور اس کی اہلیہ ایک سال پہلے اسے چھوڑ کر چلی گئی ہے۔گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ مشتبہ شخص کا رویہ معمول کے مطابق تھا اور وادات کے لیے کوئی نفسیاتی مسئلہ رہا ہوگا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *