کیاسچ میں وٹامن ڈی کا کوئی فائدہ ہے؟

ہرکسی کو وٹامن ڈی سے پیار ہوتا ہے۔ یہ وہی وٹامن ہے جو ہمیں سورج سے ملتی ہےvitamin d 1۔ سردیوں میں تو وٹامن ڈی کا بہانہ بنا کے لوگ چھت پہ بیٹھے بھی نظر آتے ہیں۔ اس کے علاوہ کئی سال سے ہماری آبادی کا ایک بڑا حصّہ وٹامن ڈی کے سپلمنٹس بھی کھاتا ہے۔ اور مانا جاتا ہے کہ وٹامن ڈی میں شیزوفینیا سے لے کر کینسر تک کا علاج میسر ہے۔
ہڈ یوں کے امراض کے علاج میں بھی وٹامن ڈی کا ہمیشہ اہم کردار مانا گیا ہے۔اس کے علاوہ قوتِ مدافعت کو بڑھانے اور بڑھتی عمر کے نتائج گھٹانے کا بھی موثر ذریعہ وٹامن ڈی کو ہی مانا جاتا ہے۔ مگر ایک نئی تحقیق نے یہ بات ثابت کی ہے کہ وٹامن ڈی کے ایسے کوئی اثرات نہیں ہوتے۔ اور وٹامن ڈی کے سپلمنٹس اور اس کے پیچھے کام کرتی کھربوں کی کمپنیوں سے میرا اُٹھ گیا ہے۔
مزید تحقیق سے یہ بھی پتہ چلا ہے کہ وٹامن ای کے سپلمنٹس بھی مردوں میں مثانے کے کینسر کی ایک بڑی وجہ ہیں۔ اور ہزاروں لوگوں پر کی گئی تحقیق سے یہ بھی پتہ چلا ہے کہ طرح طرح کے وٹامن سپلمنٹس یا معدنیات کے سپلمنٹس کینسر سے لڑنے میں کسی طور موثر نہیں۔اس کے علاوہ ہڈیوں کی مضبوطی اور دل کے امراض میں بھی وٹامن ڈی کسی صورت کار آمد نہیں بلکہ وٹامن ڈی لینے والوں میں فریکچر کی شرح زیادہ ہی تھی۔
ایک اور حیران کن بات یہ ہے کہ وٹامن ڈی کی زیادہ مقدار بھی جسم کے لیے مضر ہے۔2000 معمر آسٹریلین باشندوں پر کی گئی تحقیق اس بات کی تصدیق کرتی ہے کہ جو لوگ زیادہ وٹامن ڈی لیتے ہیں اُن میں لڑکھڑا کے گرنے اور ہڈیا ں فریکچر ہونے کے واقعات کی تعداد زیادہ ہے۔ اس لیے سورج میں اُتنا بیٹھیں جتنا کام ہے زیادہ بیٹھنے کے اثرات کچھ اور ہی ہوں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *