2013کے انتخابات میں کالعدم تنظیم کی شرکت کا انکشاف

Maulana-Ahmed-Ludhianviپانچ سیاسی و مذہبی جماعتوں کے اتحاد نے، جن میں ایک کالعدم تنظیم بھی شامل تھی، ملک کے انتخابی نظام میں موجود خامیوں کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ناصرف خود کو الیکشن کمیشن سے باضابطہ تسلیم کرایا بلکہ بغیر کسی قانونی چیلنج کے الیکشن بھی لڑا۔
دسمبر، 2012 میں جے یو آئی (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق کی قیادت میں بننے والے متحدہ دینی محاذ میں اہلسنت والجماعت بھی شامل تھی۔اس تنظیم کو حکومت نے فروری، 2012 میں کالعدم قرار دے دیا تھا، تاہم یہ بات الیکشن کمیشن سے چھپائی گئی تاکہ اس تنظیم کے سربراہ مولانا محمد احمد لدھیانوی پانچ جماعتی اتحاد کی چھتری تلے الیکشن میں حصہ لے سکیں۔انتخابی نشان کیلئے درخواست دیتے ہوئے اہلسنت والجماعت کی جگہ، اسی تنظیم کے سابق نائب صدر مولانا محمد ابراہیم کی قیادت میں پاکستان راہِ حق پارٹی کو اتحاد کا حصہ ظاہر کیا گیا۔ذرائع کے مطابق پاکستان راہ حق پارٹی دراصل اہلسنت والجماعت کا ہی سیاسی ونگ ہے۔اہلسنت والجماعت پنجاب کے سیکریٹری اطلاعات غلام مصطفٰی بلوچ نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ان کی پارٹی متحدہ دینی محاذ کا حصہ ہے۔تاہم انہوں نے اس سوال کا کوئی جواب نہیں دیا کہ 2013 سے پہلے انتخابی نشان حاصل کرنے کی درخواست دیتے ہوئے اس بات کو الیکشن کمیشن سے کیوں چھپایا گیا۔
ماضی میں سپاہ صحابہ کہلانے والی اہلسنت والجماعت کے سربراہ مولانا محمد لدھیانوی نے این اے -89 جھنگ سے الیکشن میں حصہ لیا لیکن وہ پاکستان مسلم لیگ-نواز کے شیخ اکرم سے 3000 وٹوں سے شکست کھا گئے۔بعد میں انہوں نے کامیاب امیدوار کی اہلیت کو چیلنج کرتے ہوئے ان پر قرض نادہندہ ہونے کا الزام عائد کیا۔ان کی پٹیشن پر فیصل آباد میں ایک الیکشن ٹربیونل نے شیخ اکرم کو نااہل قرار دیتے ہوئے لدھیانوی کو فاتح امیدوار قرار دے دیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *