لال مسجد میں قائم جامعہ حفصہ کی لائبریری اسامہ بن لادن کے نام

lal masjidاسلام آباد میں واقع لال مسجد سے منسلک مذہبی اسکول نسواں جامعہ حفصہ کی لائبریری کا نام تبدیل کر کے بطور اعزاز القاعدہ کے مقتول رہنما اسامہ بن لادن کے نام پر رکھ دیا گیا ہے۔
مدرسہ لال مسجد کے متنازعہ امام اور سخت گیر عالم مولانا عبدالعزیز کی زیر سرپرستی میں چلایا جاتا ہے۔ اس مسجد میں مذہبی شدت پسند افراد بھی پناہ لیتے رہے ہیں۔واضح رہے دو ہزار سات میں ریٹائرڈ جنرل مشرف کی حکومت میں لال مسجد میں انتہا پسندوں کے خلاف ایک ہفتے طویل فوجی محاصرے کے بعد ہونے والے آپریشن میں تقریبا سو افراد ہلاک ہوئے تھے جس کے رد عمل میں پاکستان بھر میں متعدد حملے کیئے گئےتھے۔.
اب جامعہ حفصہ مدرسہ سے منسلک لائبریری بطور اعزاز بن لادن کے نام سے منسوب کر دی گئی ہے ، اسامہ 9/11 میں امریکا پر حملے کے منصوبہ ساز تھے۔“ایک ذرائع نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر خبر رساں ادارے اے ایف پی کو جمعرات کو بتایا کہ یہ بات درست ہے۔انہوں نے کہا کہ "وہ دوسرں کے لیئے دہشت گرد ہو سکتے ہوں لیکن ہم انہیں دہشت گرد تسلیم نہیں کرتے ہمارے لیئے وہ اسلام کے ہیرو تھے۔"
لائبریری کے دروازے پر اسامہ کے نام کی تختی لگی ہوئی ہے۔ ان کے نام کے ساتھ ' شہید' لکھا گیا ہے۔
اسامہ بن لادن کو دو ہزار گیارہ میں پاکستان کے شہر ایبٹ آباد میں امریکی اسپیشل فورسز نے ایک آپریشن میں ہلاک کر دیا تھا اس کے بعد پاکستان میں کچھ انتہا پسندوں نے انہیں ہیرو قرار دیا تھا۔ان کی پہلی برسی کے موقع پر سینکڑوں لوگ ان کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیئے سڑکوں پر نکل آئے تھے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *