اقتصادی رابطہ کمیٹی نے چینی اور گندم درآمد کرنے کی اجازت دے دی

اسلام آباد: کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے 2 لاکھ ٹن چینی، 4 لاکھ ٹن گندم اور 24 ارب روپے کی کووڈ 19 ویکسین کی خریداری کے لیے اضافی گرانٹ کی منظوری دے دی۔

 رپورٹ کے مطابق وزیر خزانہ شوکت ترین کی صدارت میں ہونے والے اجلاس میں چین سے سپرے ڈرون کی درآمد پر ڈیوٹی معاف کر دی گئی۔

ای سی سی نے ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان (ٹی سی پی) کے ذریعے فوری طور پر 2 لاکھ ٹن چینی کی درآمد کی منظوری دے دی جو کہ قیمتوں میں اضافے کو روکنے کے لیے اسٹریٹیجک ذخائر کے لیے پہلے سے منظور شدہ تقریباً 6 لاکھ ٹن کی مقدار میں سے ہے۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ ایک لاکھ ٹن چینی پہلے ہی درآمد کی جاچکی ہے جبکہ مزید 2 لاکھ ٹن کے ٹینڈرز کو منسوخ کرنا پڑا کیونکہ بین الاقوامی قیمتیں تقریباً 103 روپے فی کلو تھیں۔

سیکریٹری صنعت و پیداوار نے ای سی سی کو بین الاقوامی مارکیٹ میں چینی کی خریداری کے لیے جاری کیے گئے سابقہ ٹینڈرز اور بین الاقوامی مارکیٹ میں اشیا کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کی وجہ سے ان ٹینڈرز کی منسوخی کے فیصلے کے بارے میں بریف کیا۔

انہوں نے خاص طور پر کورونا کی وجہ سے بڑھتی ہوئی نقل و حمل کی قیمت اور پیٹرولیم کی قیمتوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی مارکیٹ میں اشیائے خورونوش کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے۔

وزیر خزانہ نے صنعتوں، تجارت، خزانہ اور قانون کے سیکریٹریز پر مشتمل ایک ذیلی کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا جو کہ مشاورتی اجلاس منعقد کرے گی۔

ذیلی کمیٹی بین الاقوامی مارکیٹ میں ٹینڈرز بروقت انداز میں لانے کے لیے طریقہ کار طے کرے گی تاکہ کھانے کی اشیا درآمد کرنے کے لیے انتہائی سستی قیمت حاصل کی جاسکے اور ملک کے قیمتی زرمبادلہ کے ذخائر کو بچایا جا سکے۔

شوکت ترین نے حکام کو یہ بھی ہدایت کی کہ وہ صوبوں کی جانب سے اشیا کی قیمتوں کے تخمینے کے عمل کو بہتر بنانے کے لیے سفارشات پیش کریں۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ خاص طور پر کھانے کی اشیا کی درآمد کے لیے مناسب تخمینہ پیش کیا جانا چاہیے۔

کمیٹی نے متعلقہ عہدیداروں کو ہدایت کی کہ وہ بقیہ 3 لاکھ ٹن چینی کی درآمد کے انتظامات کو حکومتی طریقہ کار کے ذریعے جلد از جلد اسٹریٹیجک ذخائر بنانے اور ملک بھر میں چینی کی ہموار فراہمی کو یقینی بنانے کی تیاری کریں۔

علاوہ ازیں ای سی سی نے ٹی سی پی کے ذریعے 2 لاکھ ٹن چینی کی درآمد کے لیے متعلقہ مالی انتظام کی بھی منظوری دی۔

اجلاس نے وزارت نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ کی سفارش پر اسٹریٹیجک ذخائر کے لیے 4 لاکھ ٹن گندم کی درآمد کی بھی منظوری دی۔

اس نے متعلقہ عہدیداروں کو ہدایت کی کہ وہ حکومت سے حکومت کے انتظامات کے ذریعے گندم درآمد کرنے کا آپشن تلاش کریں اور اس میں تیزی لائیں۔

ای سی سی نے افغانستان میں ابھرتی ہوئی صورتحال کے تناظر میں اسٹریٹیجک ذخائر کی تعمیر کی اہمیت پر زور دیا جو گھریلو مارکیٹ میں قیمتوں کو متاثر کر سکتی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: