امریکا میں دو مساج پارلرز میں فائرنگ، خواتین سمیت 8 افراد ہلاک

امریکا کی ریاست جارجیا کے شہر اٹلانٹا اور ایک نواحی علاقے میں دو مساج پارلرز میں فائرنگ سے بیشتر ایشیائی نژاد خواتین سمیت 8 افراد ہلاک ہوگئے۔

غیرملکی خبر رساں ادارے ’اے پی‘ کے مطابق منگل کی شام کو اٹلانٹا اور ایک نواحی علاقے کے مساج پارلرز میں فائرنگ کی گئی اور ہلاک ہونے والے والوں میں زیادہ تر ایشیائی نژاد خواتین تھیں۔

اس ضمن میں پولیس نے بتایا کہ فائرنگ کے تبادلے کے بعد 21 سالہ مشتبہ شخص کو جنوب مغربی جارجیا سے حراست میں لیا گیا۔‎

چیروکی کاؤنٹی شیرف کے دفتر کے ترجمان کیپٹن جے بیکر نے بتایا کہ تقریباً شام 5 بجے حملے شروع ہوئے۔

انہوں نے بتایا کہ اٹلانٹا سے 30 کلومیٹر شمال میں ایک دیہی علاقے کے قریب واقع ’ینگز ایشین مساج‘ پالر میں فائرنگ کی گئی۔

جے بیکر نے بتایا کہ دو افراد وقوعہ پر ہی دم توڑ گئے اور 3 کو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ان میں سے دو کی بھی موت ہوگئی۔

تاہم وقوعہ سے کسی کو گرفتار نہیں کیا گیا۔

علاوہ ازیں صبح 5:50 بجے کے قریب اٹلانٹا کے بک ہیڈ علاقے میں پولیس کو ڈکیتی کی واردات سے متعلق کال موصول ہوئی اور جب پولیس ’گولڈ سپا‘ پہنچی تو وہاں 3 خواتین کی لاشیں ملیں جنہیں گولی مار کر ہلاک کیا گیا تھا۔

مقامی میڈیا کے مطابق اسی دوران پولیس کو دوبارہ فائرنگ سے متعلق ایک ایمرجنسی کال موصول ہوئی اور جب اہلکار سڑک پار کرکے ایک اور سپا تھراپی سینٹر پہنچے تو خاتون کی لاش ملی اور اسے بھی گولی مار کر ہلاک کیا گیا تھا۔

اٹلانٹا کے پولیس چیف روڈنی برائنٹ نے کہا کہ ’ہلاک ہونے والے ایشیائی ہوسکتے ہیں‘۔

جنوبی کوریا کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا گیا کہ اٹلانٹا میں اس کے سفارت کاروں نے پولیس سے تصدیق کی ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں 4 خواتین کورین نژاد تھیں۔

وزارت خارجہ نے کہا کہ اٹلانٹا میں اس کے قونصل جنرل کا دفتر خواتین کی شہریت کی تصدیق کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

یہ ہلاکتیں ایشین امریکیوں کے خلاف حالیہ حملوں کی لہر کے دوران ہوئی ہیں۔

گورنمنٹ برائن کیمپ نے سماجی روابط کی ویب سائب ٹوئٹر پر کہا کہ ’ہم سب ان خوفناک کارروائیوں کے متاثرین کے لیے دعا گو ہیں‘۔

بعد ازاں چورتھ شوٹنگ میں مشتبہ شخص کو سی سی ٹی وی فوٹیج کی مد سے گرفتار کیا گیا۔

حکام نے بتایا کہ ووڈ اسٹاک سے تعلق رکھنے والے رابرٹ آرون لانگ کو جنوب میں کرسپ کاؤنٹی میں تحویل میں لیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ حالیہ برسوں میں امریکا کی مختلف ریاستوں میں عوامی مقامات پر فائرنگ کے متعدد واقعات پیش آچکے ہیں اور ان واقعات میں زیادہ تر نائٹ کلبوں کو نشانہ بنایا گیا۔

جس میں قابل ذکر واقعہ امریکی ریاست فلوریڈا میں رونما ہوا تھا۔

فلوریڈا کے جنوبی شہر اورلینڈو میں ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب میں فائرنگ سے 50 افراد ہلاک اور 53 زخمی ہوگئے تھے۔

گزشتہ برس نومبر میں امریکی ریاست نیویارک میں رات گئے منعقد پارٹی میں فائرنگ سے 2 افراد ہلاک اور 14 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

فلوریڈا کے جنوبی شہر اورلینڈو میں ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب میں فائرنگ سے 50 افراد ہلاک اور 53 زخمی ہوگئے تھے۔