سیویج: معروف گلوکارہ کا سیکس ٹیپ کی وجہ سے بلیک میل کرنے والے کو پیسے دینے سے انکار

نائیجیریئن سٹار ٹیوا سیویج نے انکشاف کیا ہے کہ اُنھیں ایک سیکس ٹیپ کی وجہ سے بلیک میل کیا جا رہا ہے تاہم اُنھوں نے کہا کہ وہ رقم کی ادائیگی کے اس ناجائز دباؤ میں نہیں آئیں گی۔

اُنھوں نے کہا کہ ویڈیو حادثاتی طور پر اُن کے بوئے فرینڈ نے سنیپ چیٹ پر اپ لوڈ کر دی تھی۔ بعد میں جب اُنھیں احساس ہوا تو اُنھوں نے ویڈیو ڈیلیٹ کر دی تھی تاہم تب تک دیر ہو چکی تھی۔

جب اُنھوں نے پہلے پہل یہ ویڈیو دیکھی تو اُن کے مطابق وہ رو پڑیں اور ردِ عمل سے خوفزدہ ہو گئیں۔

اکتالیس سالہ سیویج ایفروبیٹس موسیقی میں دنیا کے سب سے بڑے سٹارز میں سے ایک ہیں اور اُنھوں نے یونیورسل میوزک گروپ کے ساتھ معاہدہ کر رکھا ہے۔

وہ ’کیلے کیلے‘ اور ’ایمیناڈو‘ جیسے گانوں کے لیے مشہور ہیں اور وہ نائیجیریا میں ڈان جیزی کے میوین ریکارڈز کمپنی کا بھی حصہ تھیں۔

اُنھیں نائیجیریا میں خاتونِ اول بھی کہا جاتا ہے۔

اُنھوں نے نیویارک میں پاور 105.1 ایف ایم کی اینجی مارٹینیز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ 'میں اسے سیکس ٹیپ نہیں کہوں گی بلکہ یہ میرے اور اس شخص کے درمیان ویڈیو ہے جسے میں ڈیٹ کر رہی ہوں۔'

اُنھوں نے انکشاف کیا کہ یہ واقعہ گذشتہ ماہ پیش آیا اور اس شخص نے اُن سے پیسے نکلوانے کی کوشش کی مگر یہ کہ وہ کسی کو بھی خود کو 'کوئی فطری چیز کرنے پر' بلیک میل نہیں کرنے دیں گی۔

اُنھوں نے کہا 'میں اتنی خبطی ہوں کہ خود ہی یہ اپ لوڈ کر دوں گی لیکن تم اس سے پیسے نہیں کما سکو گے۔'

اس وقت وہ امریکہ میں ہیں جہاں وہ اپنے تازہ ترین البم ’واٹر اینڈ گاری‘ کی تشہیر کر رہی ہیں جس میں امریکی ستارے بشمول برینڈی اور نیس بھی شامل ہیں۔

وہ اس انٹرویو کے دوران پُرسکون رہیں مگر اُنھوں نے کہا کہ وہ اندرونی بھونچال کا سامنا کر رہی ہیں اور جب اُنھیں بدھ کو پہلی مرتبہ یہ ویڈیو بھیجی گئی تو وہ سو نہیں پائیں۔

'اب کیوں، جب میوزک اتنا اچھا ہے، اور میں نہیں چاہتی کہ جو بھی ہو رہا ہے، اس سب پر یہ بات حاوی ہو جائے۔'

وہ کہتی ہیں کہ اُنھیں فکر تھی کہ اُن کے مداح، اُن کے دوست اور خاندان کے افراد اُن کے بارے میں کیا سوچیں گے مگر یہ کہ وہ رقم کے مطالبے کے اس ناجائز دباوں میں نہیں آئیں گی۔

سیویج کی سنہ 2013 میں آرٹسٹ مینیجر تنجی 'ٹی بلز' بلوگن سے شادی ہوئی تھی مگر 2016 میں ایک دوسرے پر بے وفائی کا الزام عائد کرنے کے دو سال بعد سیویج نے طلاق کی درخواست دائر کر دی تھی۔

اُن کا ایک چھ سال کا بچہ بھی ہے اور سیویج کو فکر ہے کہ اس ویڈیو کا اس پر اور ان کی والدہ پر لیا اثر ہوگا۔

'میں اس سے بات کروں گی اور میرے لیے یہ ضروری ہے کہ جب وہ 15 سال کا ہو اور کوئی اس سے بدتمیزی کرے، تو مجھے اسے اس کے لیے تیار کرنا ہے۔'

کسی شخص کی نجی تصاویر اُن کی اجازت کے بغیر سوشل میڈیا پر بدنامی یا پیسے حاصل کرنے کی غرض سے شائع کرنا ’انتقامی پورن‘ کہلاتا ہے۔

نائیجیریا میں سنہ 2015 کے ایک سائبر کرائم ایکٹ میں انتقامی پورن کو جرم قرار دیتے ہوئے اس کی سزا تین سال قید مقرر کی گئی تھی۔

دو سال قبل ایک شخص کو اپنی محبوبہ کی تصاویر سوشل میڈیا پر پوسٹ کرنے کے جرم میں سزا سنائی گئی تھی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: