لاہور: دو کمسن بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے الزام میں سوتیلا باپ گرفتار، 14 سالہ بچی کے حاملہ ہونے کی تصدیق

پاکستان کے شہر لاہور میں پولیس نے دو کمسن بہنوں کے ساتھ مبینہ طور پر جنسی زیادتی کرنے کے الزام میں ان کے سوتیلے باپ کو گرفتار کیا ہے۔ پولیس کے مطابق متاثرہ بچیوں کی میڈیکل رپورٹ میں اس بات کی تصدیق ہوئی ہے کہ انہیں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

لاہور کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) انویسٹیگیشن کے ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ متاثرہ لڑکیوں میں سے ایک کے حاملہ ہونے کی بھی تصدیق ہو چکی ہے۔ تاہم دوسری متاثرہ بچی کے حوالے سے اس بات کی تصدیق تاحال نہیں ہو پائی ہے۔

متاثرہ لڑکیوں کی عمریں بالترتیب 14 اور 12 برس ہیں۔

سول لائنز پولیس کے ایس پی انویسٹیگیشن اسد الرحمان نے بی بی سی کو بتایا کہ 'بچیوں کی ماں کے مطابق ان کی 14 سالہ بیٹی چار ماہ سے حاملہ ہے‘۔ اور پولیس کے مطابق اس بات کی تصدیق ہو چکی ہے کہ بچی حاملہ ہے۔

سول لائنز پولیس کے ایس پی انویسٹیگیشن اسد الرحمان کا کہنا تھا کہ ملزم کا ڈی این اے ٹیسٹ کرنے کے لیے نمونے حاصل کر لیے گئے ہیں، جنھیں تصدیق کے لیے فرانزک لیبارٹری بھجوا دیا گیا ہے اور رپورٹ کا انتظار ہے۔ ڈی این اے ٹیسٹ کی مدد سے اس بات کی تصدیق ہو پائے گی کہ بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا ملزم یعنی ان کا سوتیلا باپ ہی تھا یا نہیں۔

ڈی آئی جی انویسٹیگیشن کے ترجمان کے مطابق 'ملزم گذشتہ کئی ماہ سے مبینہ طور پر دونوں بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بنا رہا تھا۔'

لاہور کی رہائشی خاتون نے حال ہی میں تھانے میں رپورٹ درج کروائی جس میں الزام عائد کیا گیا کہ ان کا دوسرا شوہر گذشتہ آٹھ سے نو ماہ سے ان کی دو کمسن بیٹیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کر رہا تھا۔

خاکہ

انھوں نے پولیس کو دیے گئے اپنے بیان میں بتایا کہ ان کی ایک سال قبل ملزم سے دوسری شادی ہوئی۔ پہلی شادی سے ان کے آٹھ بچے ہیں جن میں چھ بیٹیاں شامل ہیں۔

شادی کے بعد وہ بچوں کے ہمراہ اپنے دوسرے شوہر کے مکان میں منتقل ہو گئی تھیں۔

انھوں نے پولیس کو بتایا کہ 'لڑکیوں کے سوتیلے باپ نے دونوں بچیوں کو دھمکیاں دی تھیں اور ڈرا رکھا تھا کہ اگر اپنی ماں کو یا کسی اور کو بتایا تو میں تمہیں اور تمہاری ماں کو قتل کر دوں گا۔'

ماں کا کہنا تھا کہ دھمکیوں کی وجہ سے دونوں بچیاں اتنا عرصہ خاموش رہیں اور انھیں کچھ نہیں بتایا۔ تاہم ان کے مطابق چند روز قبل ملزم نے مبینہ طور پر ایک مرتبہ پھر 14 سالہ بچی کو زیادتی کا نشانہ بنایا تو اس نے انھیں بتا دیا۔

خاتون کے مطابق ان کی بیٹی نے انھیں بتایا کہ ’وہ گذشتہ آٹھ سے نو ماہ سے اس اذیت سے گز رہی تھی‘ لیکن وہ بتانے کی ہمت پیدا نہیں کر پائی تھی۔‘

ماں کے مطابق بڑی بہن کی کہانی سننے پر ان کی 12 سالہ بیٹی بھی بول پڑی اور اس نے بتایا کہ ان کا ’سوتیلا باپ گذشتہ چھ سے سات ماہ سے انھیں بھی جنسی زیادتی کا نشانہ بنا رہا ہے۔'

سول لائینز انویسٹیگیشن پولیس نے ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے بعد منگل کو اسے گرفتار کر لیا ہے۔

ایس پی انویسٹیگیشن سول لائینز اسد الرحمان نے بی بی سی کو بتایا کہ لڑکیوں کی ماں نے پولیس کو یہ بھی بتایا ہے کہ ان کی 14 سالہ بیٹی حاملہ ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ 'لڑکیوں کی ماں کے بیان کی تصدیق ہو چکی ہے۔'

ان کا کہنا تھا کہ میڈیکل ٹیسٹ کے بعد اس بات کی بھی تصدیق ہو چکی ہے کہ دونوں لڑکیوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ ملزم سے مزید تفتیش جاری ہے۔

error: