لاہور سکول آف لاء کی طرف سے اپنے طلبہ میں یونیورسٹی سطح پر پوزیشن ہولڈرز کے لئے دس لاکھ روپے انعام کا اعلان

لاہور : لاہور سکول آف لاء نے اپنے طلبہ میں یونیورسٹی سطح پر پوزیشن ہولڈرز کے لئے دس لاکھ روپے انعام دینے کا اعلان کردیا ۔سکول کے ویپ سائٹ سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ جو طالب علم یونیورسٹی سطح پرپوزیشن لے گا تو اس کو بالترتیب پانچ ، تین اور دو لاکھ کی خطیر رقم سے نوازا جائیگا ۔ واضح رہے کہ لاہور سکول آف لاء ماڈل ٹاوٴن میں واقع قانون کا ایک معروف ادارہ ہے جس نے مختصر وقت میں درجہ بندی (رینکنگ ) میں معروف اداروں کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے جس کی وجہ ادارے میں ایک معیاری تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیت پربھی توجہ مرکوز کرنا ہے ۔

ادارے کے ڈائریکٹر معروف صحافی اجمل شاہ دین نے اس کی تاسیسی پروگرام میں اس بات کو واضح کرچکاہے کہ اس ادارے کے قیام کا مقصد کاروبار نہیں ہے بلکہ ایک معیاری لاء انسٹیٹیوٹ کا قیام ہے جس میں معیاری تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیت کا بھی ایک خاص اہتمام ہو تاکہ معاشرے کو عدل وانصاف فراہم کرنے والے ایسے افراد تیار کئے جائیں جو بغیر کسی لالچ کے قوم وملت کی خدمت کو اپنا شعار بنالے ۔اس ادارے کی ایک خصوصیت یہ بھی ہے کہ اس کے پرنسپل سابق وزیر قانون جسٹس (ر) افضل حیدر نے وطن عزیز میں قانون کی حکمرانی کے لئے اپنی پوری زندگی جہدوجہد میں گزاری ہے جس کی خدمات کسی سے مخفی نہیں ہیں اس کے علاوہ معروف قانون دان اسد جمال ایڈوکیٹ بھی بطور ڈین اس ادارے میں اپنی خدمات انجام دے رہیں ۔ ادارے کی ویب سائٹ میں نئے سیشن کے لئے داخلہ کا اعلان بھی کیا گیا ہے جس کے لئے ضروری ہے طالب علم لاء ایڈمیشن ٹیسٹ پاس کرچکا ہو اور پڑھائی میں دلچسپی رکھتا ہو ۔اسی طرح مستحق طلبہ اور اقلیت کے لئے سکالرشب کا اعلان بھی ادراے کی طرف سے کیا گیا ہے ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *