لیونل میسی: آرجنٹائن کے فٹبال کھلاڑی لیونل میسی اور بارسیلونا کی راہیں جدا ہونے پر سوشل میڈیا صارفین کا ردِعمل

فٹبال کلب بارسلونا کا کہنا ہے کہ ’مالی اور انتظامی مشکلات کی وجہ‘ سے فٹبال سٹار لیونل میسی اب بارسلونا کے لیے نہیں کھیلیں گے۔

34 سالہ میسی یکم جولائی سے فری ایجنٹ ہیں جب ان کا کانٹریکٹ ختم ہو گیا تھا۔

اس کے دو ہفتے کے بعد ان کا کلب کے ساتھ قدرے کم معاوضے پر معاہدہ تو ہو گیا تھا تاہم یہ معاہدہ اس بات پر مشروط تھا کہ اگر کلب کچھ کھلاڑیوں کو بیچ کر میسی کی تنخواہ دینے کے لیے وسائل جمع کر لیتا۔

کلب کا کہنا ہے کہ ’تاہم دونوں فریق کو اس بات کا افسوس ہے کہ کھلاڑی اور کلب دونوں کی خواہشات پوری نہ ہو سکیں۔‘

بارسلونا کا کہنا ہے کہ میسی اس کلب کے ساتھ اپنے 21 سالہ کیریئر کی توسیع کا معاہدہ جمرات کو طے کرنے والے تھے تاہم انھوں نے لا لیگا پر اس کی ناکامی کی ذمہ داری ڈالی ہے۔

میسی نے 2026 تک کے لیے بارسلونا کے ساتھ معاہدہ کر لیا تھا تاہم لا لیگا کا کہنا ہے کہ اس کلب کو پہلے تنخواہیں کم کرنی ہوں گی پھر ہی نئے کھلاڑیوں کا اندراج ہو سکے گا۔

بارسلونا کا کہنا ہے کہ ’بارسلونا اور میسی دونوں کے درمیان معاہدہ طے پانے کے باوجود ہسپانوی لیگ کے نگراں ادارے کی وجہ سے یہ عمل میں نہیں آ سکتا۔‘

میسی بارسلونا کے اہم ترین گول سکوررز میں سے ایک ہیں اور انھوں نے اس کلب کے لیے 672 گول کیے ہیں اور 10 مرتنہ لا لیگا ٹائیٹل جیتا ہے، چار چیمپیئنز لیگیں جیتی ہیں، سات کوپا دل ریز اور بالو ڈور چھ مرتبہ جیتے ہیں۔

میسی کو بارسلونا میں رکھا اس کلب کے صدر یوہان لاپورتا کی اہم ترین ترجیحات میں سے ایک رہی ہے۔

دنیا کے اس بہترین کھلاڑی کے مستقبل کے بارے میں ابھی کچھ کہنا ممکن نہیں ہے۔ اور بارسلونا کی مالی مشکلات کی وجہ اب میسی کا اس کلب میں رہنا انتہائی مشکل ہو چکا ہے۔

اس سال کے آغاز میں اس کلب کے صدر کے انتخابات ایک ایسے وقت پر ہوئے تھے جب بارسلونا تقریباً دیوالیہ ہو چکا تھا۔

میسی شاید اب دنیا کے سب سے زیادہ ڈیمانڈ والے کھلاڑی بننے والے ہیں۔ اکثر کہا جاتا ہے کہ وہ یا تو پیرس سینٹ جرمین یا پھر مینقسٹر سٹی جائیں گے مگر اس وقت تک یہ واضح نہیں کہ میسی اپنا اگلا سیزن کہاں کھیلیں گے۔

ان کے پا ایک اور آپشن امریکن میجع لیگ فٹبال بھی ہے جو پر وہ ماضی میں بھی غور کر چکے ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال میسی نے باسلونا سے کہا تھا کہ انھیں گرمیوں میں فری ایجنٹ بننے کی اجازت دی جائے تاہم بعد میں انھوں نے فیصلہ کیا کہ وہ گرمیوں میں بھی بارسلونا ہی رہیں گے کیونکہ کسی بھی کلب کے انھیں بارسلونا سے نکالنے کے لیے درکار 700 ملین یورو کا جرمانہ دینے کی سکت نہیں ہے اور بارسلونا کا اصرار تھا کہ وہ اس شرط سے دستبردار نہیں ہوں گے۔

میسی

ایک عہد کا اختتام

سنہ 2000 میں 13 سال کی عمر میں میسی نے بارسلونا کی مشہور لا ماسیا اکیڈمی کا رخ کیا تھا اور 2004 میں انھوں نے اپنا سینیئر ڈیبیو کیا تھا۔

انھوں نے اس کلب کے لیے 778 میچ کھیلے، 672 گول کیے جن میں سے 120 چیمپیئنز لیگ کے گول ہیں۔ چیمپیئنز لیگ میں ان کے گولوں کی تعداد دوسرے نمبر پر ہے، سب سے زیادہ گول کرسٹیانو رونالڈو نے کر رکھے ہیں۔ میسی نے اس کے علاوہ 474 لا لیگا گول بھی کیے ہیں۔

میسی نے چھ مرتبہ یورپین گولڈن شو انعام جیتا ہے جو کہ یورپ کا سب سے زیادہ گول کرنے کا انعام ہوتا ہے۔

سوشل میڈیا پر ردِعمل: ’مجھے لگا میسی اور بارسیلونا میں زندگی بھر کی شادی ہوئی تھی‘

میسی

بارسیلونا اور میسی کی راہیں جدا ہونے پر دنیا بھر کے سوشل میڈیا پر صارفین کی ایک بڑی تعداد کا ردعمل سامنے آیا ہے۔ بہت سے لوگ خوش ہیں کہ ان کے بچپن سے جوانی تک میسی نے بارسیلونا کے لیے کھیلتے ہوئے انھیں انگنت یادیں دی ہیں۔

کنشکا راج سنگھ نے اسے 'عظیم کلب کیریئر' قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ فٹبال کی دنیا کی سب سے بڑی خبر ہے۔

صبا پُرامید ہیں اور کہتی ہیں کہ اس بات سے کوئی فرق نہیں پڑے گا کہ میسی کس کلب میں جاتے ہیں۔

خدیجہ لکھتی ہیں کہ ہسپانوی فٹبال ٹورنامنٹ لا لیگا نے گذشتہ چار برسوں میں میسی، رونالڈو، ریموس اور نیمار کو کھو دیا ہے۔ 'یہ پہلے سوچا بھی جاسکتا تھا۔'

بہت سے صارفین کا اس بات پر اتفاق تھا کہ 21 سال تک ان کے بارسیلونا کے ساتھ سفر بھولنا مشکل ہوگا۔ کرکٹ تجزیہ کار ہرشا بھوگلے نے لکھا کہ 'مجھے لگا میسی اور بارکا میں زندگی بھر کی شادی ہوئی تھی۔'

Saba64087836

میسی کی نئے کلب کی کھوج میں ان کے فینز بھی دلچسپی لے رہے ہیں۔ اور یہی موضوع میمز کا مرکز بنا ہوا ہے۔ ان مزاحیہ میمز میں دکھایا گیا کہ کیسے انگلش فٹبال کلب میسی کی خدمات خریدنے کے لیے پیسے جمع کر رہے ہیں۔