مائیکروسافٹ مشہور کیلبری فونٹ کی جگہ کسی اور کو دینے کے لیے تیار

پاناما کیس کے دوران کیلبری فونٹ لوگوں کی توجہ بنا رہا ۔

مگر برسوں بعد مائیکرو سافٹ نے کیلبری کے متبادل فونٹ کی تلاش شروع کردی ہے۔

کیلبری 2007 سے مائیکرو سافٹ آفس کا ڈیفاللٹ فونٹ ہے جس کی جگہ کمپنی نے 5 ممکنہ متبادل تجویز کیے ہیں۔

تاہم کیلبری فونٹ فونٹس میں موجود رہے گا۔

مائیکرو سافٹ نے 28 اپریل کو ایک ٹوئٹ میں بتایا 'ڈیئر کیلبری ہمیں اپنے اکٹھے گزارے جانے والے وقت سے محبت ہے، مگر اب اس تعلق کا وقت ختم ہورہا ہے'۔

کمپنی نے صارفین سے پوچھا ہے کہ وہ 5 متبادل فونٹس میں سے اپنے پسند کے فونٹ کے بارے میں بتائیں۔

ان 5 فونٹس میں ٹینورائٹ، بائرسٹاڈٹ، سکینا، سی فورڈ اور گرانڈ ویو شامل ہیں۔

ٹینورائٹ کو ایرن میکلوفین اور وای ہیوانگ نے ڈیزائن کیا اور کمپنی کے مطابق اس فونٹ کا انداز sans serif جیسا ہے مگر یہ زیادہ دوستانہ انداز کا حامل ہے۔

ٹینورائٹ — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ
ٹینورائٹ — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ

کمپنی کے مطابق فونٹ کے مختلف انداز کی وجہ سے اسے پڑھنا زیادہ آسان ہوتا ہے۔

بائرسٹاڈٹ کو اسٹیو میٹیسن نے ڈیزائن کیا جو sans serif ٹائپ کاسٹ کی طرح ہے جسے 20 ویں صدی کے وسط میں سوئس ٹائپوگرافی نے تیار کیا تھا۔

بائرسٹاڈٹ — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ
بائرسٹاڈٹ — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ

مائیکرو سافٹ کے مطابق بائرسٹاڈٹ کلیئر کٹ اسٹروک اینڈنگ والا فونٹ ہے۔

سکینا کو جان ہڈسن اور پال ہان سلو نے ڈیزائن کیا اور کمپنی کے مطابق یہ فونٹ طویل دستاویزات اور مختصر جملوں کے لیے مثالی ہے۔

سکینا — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ
سکینا — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ

سی فورڈ کو ٹوبیس فریر جونز، نینا اسٹوسینگر اور فریڈ شکلیرس نے ڈیزائن کیا جو sans serif ٹائپ فیس پر مشتمل ہے۔

سی فورڈ — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ
سی فورڈ — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ

مگر اس کا اسٹائل حروف کے درمیان فرق کو واضح کرتا ہے جس سے الفاظ کی ساخت کو شناخت کرنا آسان ہوتا ہے۔

گرانڈ ویو کو آرون بیل نے ڈٰزائن کیا جو sans serif ٹائپ فیس پر مشتمل ہے جس کا خیال جرمن شاہراؤں اور ریلوے سائن سے لیا گیا۔

گرانڈ ویو — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ
گرانڈ ویو — فوٹو بشکریہ مائیکرو سافٹ

یہ دور اور کم روشنی میں حروف کو پڑھنے کے لیے ڈیزائن کیا گیا اور طویل تحریر کے لیے مطابقت پیدا کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ آفس 2007 میں ٹائمز نیو رومن کی جگہ کیلبری فونٹ نے ڈیفالٹ ٹائپ فیس کی جگہ لی تھی جبکہ پاور پوائنٹ، ایکسل، آؤٹ لک اور ورڈ پیڈ پر ایرل کی جگہ ڈیفالٹ فونٹ بنا تھا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *