ملک میں کورونا کی ’ڈیلٹا‘ قسم کا اثر سامنے آرہا ہے، ڈاکٹر فیصل

معاون خصوصی صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے خبردار کیا ہے کہ ملک میں کورونا وائرس کی نئی اور خطرناک قسم ڈیلٹا وائرس (انڈین ویرینٹ) کا اثر سامنے آرہا ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے ملک میں بڑھتے ہوئے کورونا کیسز کے تناظر میں کہا کہ ڈیلٹا سمیت دیگر قسم کے وائرس سے بچنے کے لیے ضروری ہے کہ ایس او پیز پر عمل کریں۔

انہوں نے کہا کہ ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کے لیے فوج سمیت مقامی انتظامیہ کی مدد حاصل کی جائے گی، خصوصاً سیاحتی مقامات جانے والوں کے لیے کورونا سے متعلق پابندی کا سامنا ہوگا۔

ڈاکٹر فیصل نے اسمارٹ لاک ڈاؤن لگانے کا امکان ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ نقل و حرکت کو محدود کرنے کی ضرورت ہوگی۔

علاوہ ازیں انہوں نے کہا کہ صرف وہ ہی لوگ سیاحتی علاقوں کا رخ کریں جن کی ویکسینیشن مکمل ہوچکی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ این سی او سی اور وزارت صحت کی جانب سے بھی یہ مؤقف ہے نا مکمل ویکسینیشن والے سیاحت سے گریز کریں۔

انہوں نے کہا کہ عید کی چھٹیوں میں ان پابندیوں کا اطلاق سختی سے کیا جائے گا۔

علاوہ ازیں ڈاکٹر فیصل سلطان نے ویکسین کی کمی سے متعلق خدشات کو رد کرتے ہوئے کہا کہ ’ہمارے پاس وافر مقدار میں ویکسین موجود ہے‘۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ ’ہمارے پاس ویکسین کی کمی کی کوئی اطلاعات نہیں ہیں جبکہ گزشتہ روز ساڑھے چار لاکھ ویکسین لگی ہیں اور 60 لاکھ اضافی ویکسین آنے والی ہیں‘۔

انہوں نے کہا کہ ماسک کا استعمال اور ایس او پیز کے علاوہ ویکسینیشن اہم ہے جسے کسی بھی صورت میں نظر انداز نہ کیا جائے کیونکہ کیسز بڑھ رہےہیں اور ہمیں اسمارٹ لاک ڈاؤن کا دوبارہ سے استعمال کیا جائے گا۔

error: