Site icon Dunya Pakistan

’ویاگرا الزائمر کے علاج میں کار آمد ثابت ہو سکتی ہے‘

امریکی محققین کا کہنا ہے کہ ویاگرا کے دماغ پر مرتب ہونے والے اثرات سے ایسا لگتا ہے کہ یہ دوا الزائمر کے علاج میں کار آمد ثابت ہو سکتی ہے۔

دماغی خلیوں پر کیے گئے تجربات سے معلوم ہوا ہے کہ یہ دوا بعض ایسے پروٹینز کو نشانہ بناتی ہے جو ڈیمینشیا کے نتیجے میں جمع ہونے لگتے ہیں۔

محققین کی اس ٹیم کو 70 لاکھ افراد کے بارے میں دستیاب معلومات کے تجزیے سے پتا چلا ہے کہ جو مرد اس دوا کا استعمال کرتے تھے ان میں الزائمر ہونے کا خطرہ کم پایا گیا۔

نیچر ایجِنگ نامی جریدہ میں شائع کیے گئے ایک مضمون میں کہا گیا ہے کہ اس بارے میں مزید تحقیق ہونی چاہیے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس طرح کا کام بہت حوصلہ افزا ہے کیونکہ پہلے سے موجود ایک دوا کو دوسرے مقاصد کے لیے استعمال میں لانے کا عمل نئی دوا کی تیاری کے مقابلے میں تیز، سادہ اور سستا ہو سکتا ہے۔

نیلی گولی

ویاگرا، جو سِلڈینافِل کے نام سے بھی جانی جاتی ہے، امراض قلب کے علاج کے لیے بنائی گئی تھی کیونکہ اس کا اہم کام شریانوں کو نرم اور بڑا کر کے اعضا تک خون کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے۔

بعد میں ڈاکٹروں کو پتا چلا کہ یہ دوا یہ ہی اثرات عضوِ تناسل کی شریانوں پر بھی رکھتی ہے اور پھر اس دوا کو ایرکٹائل ڈِسفنکشن کے کامیاب علاج کے لیے تیار کیا گیا۔

اب ماہرین سمجھتے ہیں کہ اس دوا کے اور استعمال بھی ہو سکتے ہیں۔ سِلڈینافِل مردوں اور عورتوں میں پھیپھڑوں کی ایک حالت میں، جسے پلمونری ہائپرٹینشن کہتے ہیں، پہلے ہی زیرِ استعمال ہے۔

سائنسدان حال ہی میں یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ کیا ویاگرا ویسکولر ڈیمینشیا یا دماغ کی نالیوں کی وجہ سے پیدا ہونے والی دماغی کمزوری میں بھی مفید ہو سکتی ہے۔ الزائمرز ڈیمینشیا کے بعد سب سے زیادہ مریض ویسکولر ڈیمینشیا میں مبتلا ہیں جو اس وقت لاحق ہوتا ہے جب دماغ کے خلیوں کو خون کے بہاؤ میں کمی کی وجہ سے نقصان پہنچتا ہے۔

اب محققین کا خیال ہے کہ یہ دوا الزائمر کے لیے بھی مفید ہو سکتی ہے۔

ڈیمینشیا کی اس قسم کی وجوہات کو ابھی تک پوری طرح سے نہیں سمجھا جا سکا مگر ڈاکٹروں کے علم میں ہے کہ اس مرض میں مبتلا افراد کے دماغ کے اندر غیر معمولی طور پر پروٹین جمع ہو جاتی ہے۔

محققین کی اس ٹیم نے دریافت کیا ہے کہ:

محققین کی ٹیم کے سربراہ فائکسیئن چینگ کا کہنا ہے کہ یہ دریافت حوصلہ افزا ہے مگر اس میدان میں مزید تحقیق کی ضرورت ہے ’کیونکہ ہماری تحقیق نے صرف سِلڈینافِل کے استعمال اور الزائمرز لاحق ہو جانے میں کمی کے درمیان تعلق کا پتا لگایا ہے۔ اب ہم اس سلسلے میں مزید آزمائش کرنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں تاکہ الزائمر کے مریضوں میں سِلڈینافِل کے عملی فوائد کی تصدیق کی جا سکے۔‘

ماہرین کا کہنا ہے کہ اگرچہ اب تک نتائج حوصلہ افزا ہیں مگر اس کا مطلب یہ نہیں کہ یہ دوا مزید تحقیق کیے بغیر الزائمر کے مریضوں کے لیے تجویز کی جائے۔

Exit mobile version