پاکستانی فلم ’انتظار‘ ہارلم فلم فیسٹیول میں پیش ہوگی

سینیئر اداکارہ، ہدایت کارہ و پروڈیوسر سکینہ سموں کی فیچر فلم ’انتظار‘ کو آئندہ ہفتے امریکا میں ہونے والے ’ہارلم انٹرنیشنل فلم فیسٹیول‘ میں پیش کیا جائے گا۔

رواں ماہ 10 سے 13 ستمبر کے درمیان امریکی ریاست نیویارک میں 15 ویں ’ہارلم انٹرنیشنل فلم فیسٹیول‘ کا انعقاد ہوگا، جس میں دنیا کے 25 ممالک کی 94 فلمیں پیش کی جائیں گی۔

’ہارلم انٹرنیشنل فلم فیسٹیول‘ کا انعقاد رواں برس مئی میں ہونا تھا مگر کورونا کی وبا کے باعث اسے ستمبر میں منعقد کیا جا رہا ہے۔

فیسٹیول میں مجموعی طور پر 94 فلمیں اور ویب سیریز سمیت میوزک ویڈیوز پیش کی جائیں گی، جن میں سے 47 فیچر فلمیں ہیں اور ان میں پاکستانی فلم ’انتظار‘ بھی شامل ہے۔تحریر جاری ہے‎

’انتظار‘ اداکارہ سکینہ سموں کی بطور ہدایت کار و پروڈیوسر پہلی فلم ہے، جس کے پہلے ٹیزر ٹریلر کو رواں برس فروری جب کہ دوسرے کو جولائی میں جاری کیا گیا تھا۔

فلم کے پہلے ٹیزر کے ساتھ ہی فلم کو مارچ میں ریلیز کرنے کا اعلان کیا گیا تھا مگر کورونا کی وبا کے باعث فلم کو ریلیز نہیں کیا جا سکا۔

دنیا کے دیگر ممالک کی طرح پاکستان میں بھی کورونا کے باعث مارچ سے سینما ہالز بند ہیں اور تاحال سینما ہاؤسز کو نہیں کھولا جا سکا، اگرچہ حکومت نے سینماؤں کو احتیاطی تدابیر کے ساتھ کھولنے کی اجازت دے رکھی ہے، تاہم تاحال انہیں نہیں کھولا جا سکا۔

اداکارہ سکینہ سموں نے اپنی ٹوئٹ میں فلم ’انتظار‘ کا پوسٹر شیئر کرتے ہوئے بتایا کہ ان کی فلم کو امریکا میں ہونے والے ہارلم فلم فسیٹیول میں پیش کیا جائے گا۔

’انتظار‘ کی کہانی خاندان کی مجبوریوں کے گرد گھومتی ہے، جس میں بوڑھے والدین مرنے کی عمر کو اپنے بچوں کا انتظار کرتے اور موت کے خوف سے زندگی گزارتے ہیں۔

فلم میں رشتوں کی اہمیت اور نئی نسل کی جانب سے عمر رسیدہ افراد اور خصوصی طور پر والدین کو بھلانے اور والدین کی جانب سے بچوں کا انتطار کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

فلم کی کاسٹ میں ثمینہ احمد،کیف غزنوی، عدنان جعفر، رضا علی عابد اور خالد احمد شامل ہیں جب کہ اس کی کہانی ڈر سی جاتی ہے سلہ جیسے ڈرامے لکھنے والی لکھاری بی گل نے لکھی ہے۔

خیال کیا جا رہا ہے کہ فلم کو ہارلم فلم فیسٹیول میں پیش کیے جانے کے بعد پاکستان سمیت دنیا کے دیگر ممالک میں بھی ریلیز کیا جائے گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: