پاکستان سپر لیگ: لاہور قلندرز کے راشد خان نے تنِ تنہا پشاور زلمی کو چت کر دیا، قلندرز 10 رنز سے فاتح

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چھٹے ایڈیشن میں آج کے دوسرے میچ میں لاہور قلندرز نے پشاور زلمی کو 10 رنز سے شکست دے دی ہے۔

لاہور قلندرز نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے آٹھ وکٹوں پر 170 رنز بنائے جس کے جواب میں پشاور زلمی بھی آٹھ وکٹوں کے نقصان پر صرف 160 رنز بنا سکے۔

قلندرز کی جانب سے سب سے قابلِ ذکر سکور ٹم ڈیوڈ کا رہا جنھوں نے 64 رنز کی ناقابلِ شکست اننگز کھیلی۔

لاہور کی جانب سے سب سے بہترین بولنگ کارکردگی کا مظاہرہ راشد خان نے کیا جنھوں نے صرف 20 رنز دے کر پانچ وکٹیں حاصل کر لیں۔ اُنھوں نے یہ شکار چار اوورز میں کیے۔

اُن کی اس کارکردگی پر اُنھیں پلیئر آف دی میچ کا اعزاز بھی دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ روز لاہور قلندرز اور اسلام آباد یونائیٹڈ کے درمیان میچ میں بھی راشد خان نے ہی پلیئر آف دی میچ کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

سٹار بولر شاہین شاہ آفریدی اس میچ میں خاطر خواہ کارکردگی نہ دکھا سکے۔

اس کے مقابلے میں پشاور زلمی کی جانب سے شعیب ملک نے 73 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔ اُنھوں نے یہ سکور صرف 48 گیندوں پر سات چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے بنایا۔

اس کھیل میں زلمی کے بولرز کی کارکردگی واجبی سی رہی اور فیبیئن ایلن کی دو وکٹوں کے علاوہ تمام بولرز صرف ایک وکٹ لے سکے جبکہ شعیب ملک نے کوئی وکٹ حاصل نہیں کی۔

پوائنٹس ٹیبل پر اس وقت لاہور قلندرز پہلے نمبر پر ہیں، جبکہ اُن کے بعد کراچی کنگز، اسلام آباد یونائیٹڈ، پشاور زلمی، ملتان سلطانز اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز ہیں۔

سوشل میڈیا صارفین کا ردِ عمل

لاہور قلندرز پی ایس ایل کے حالیہ سیزن میں اپنی پے در پے فتوحات کے باعث پوائنٹس ٹیبل پر سرِ فہرست آ چکے ہیں اور جہاں ٹیم کے مداح اس پر پھولے نہیں سما رہے، وہیں دوسری ٹیموں کے حامی وہ وقت یاد کر رہے ہیں جب لاہور قلندرز کہیں آخری نمبرز پر ہوا کرتی تھی۔

دانش نے لکھا کہ لاہور قلندرز وہ ٹیم ہے جو پی ایس ایل سے باہر نکلنے والی سب سے پہلی ٹیم تھی، اور اب یہ وقت ہے کہ یہ ٹیم پلے آف کے لیے کوالیفائی کرنے والی پہلی ٹیم بن چکی ہے۔

پی ایس ایل

مناف نے ایک دن قبل پی ٹی آئی رہنما فردوس عاشق اعوان اور پیپلز پارٹی رہنما عبدالقادر مندوخیل کے درمیان ہونے والی ہاتھا پائی کو پی ایس ایل کا رنگ دے دیا۔

پی ایس ایل

ثنا بشیر نے راشد خان کے بارے میں لکھا کہ امپائرز کے لیے راشد خان کا پیغام: تم نہ دو آؤٹ، ہم خود ہی کر لیں گے۔

پی ایس ایل

شہزاد اعوان نے تو یہاں تک لکھ دیا کہ لاہور قلندرز چونکہ پوائنٹس ٹیبل پر سب سے پہلے نمبر پر ہیں، اس لیے ٹرافی اُنھی کے حوالے کر دینی چاہیے۔

پی ایس ایل

عائشہ صدیقہ نے لکھا کہ پانچ سیزنز کے لیے فتوحات کے اس سلسلے کا انتظار کرنا پڑا اور وہ اس احساس کو بیان نہیں کر سکتیں۔

پی ایس ایل

ایک اور صارف حسن رانا نے راشد خان کے پورے بولنگ سپیل کا خلاصہ کچھ یوں کیا کہ بارہواں اوور، چھ گیندیں، صفر رنز، چار اپیلیں، دو ریویوز اور دو وکٹیں۔ ویلکم ٹو راشد خان اکیڈمی آف لیگ سپن۔

پی ایس ایل

ملتان سلطانز بمقابلہ کراچی کنگز

اس سے قبل ہونے والے میچ میں ملتان سلطانز نے کراچی کنگز کو 12 رنز سے شکست دی۔

ابوظہبی میں کھیلے جانے والے لیگ کے 16ویں میچ میں کراچی کنگز نے ٹاس جیت کر پہلے باؤلنگ کا فیصلہ کیا تھا۔ ملتان سلطانز نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں کراچی کنگز کو جیت کے لیے 177 رنز کا ہدف دیا تھا۔

مگر کراچی کنگز کی ٹیم بابر اعظم کی عمدہ بیٹنگ کے باوجود مقررہ 20 اوورز میں صرف 164 رنز ہی بنا سکی اور اس کے سات کھلاڑی آوٹ ہوئے۔

بابر اعظم

کراچی کنگز کے کپتان عماد وسیم نے پہلے ہی اوور میں ٹیم کو کامیابی دلاتے ہوئے ملتان سلطانز کے اوپنر رحمٰن اللہ گرباز کو پویلین کی راہ دکھا دی۔

اس کے بعد ملتان سلطانز کے کپتان محمد رضوان کا ساتھ دینے صہیب مقصود آئے اور دونوں نے مل کر ٹیم کے مجموعی سکور کو 40 تک پہنچایا لیکن اس مرحلے پر صہیب کی 14 گیندوں پر 31 رنز کی اننگز اختتام کو پہنچی۔

پی ایس ایل

ویسٹ انڈیز سے آئے شیمرون ہٹمائر کی اننگز بھی سات رنز سے آگے نہ بڑھ سکی اور یوں سلطانز پانچویں وکٹ بھی گنوا بیٹھے۔

پانچ وکٹیں گرنے کے بعد خوشدل کا ساتھ دینے سہیل تنویر آئے اور دونوں نے اختتامی اوورز میں ذمے دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی ٹیم کو معقول مجموعے تک رسائی دلا دی۔ دونوں کھلاڑیوں نے 48 رنز کی شراکت قائم کی جس کی بدولت ملتان سلطانز کی ٹیم مقررہ اوورز میں پانچ وکٹوں کے نقصان پر 176 رنز بنانے میں کامیاب رہی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *