پاکستان کے سید عماد علی نے ورلڈ یوتھ اسکریبل کپ جیت لیا

پاکستان کے سید عماد علی نے کراچی میں منعقد ہونے والے ورلڈ انگلش اسکریبل پلیئرز ایسوسی ایشن (ویسپا) کے یوتھ کپ کا فائنل جیت لیا۔

کورونا وائرس کی وجہ سے یوتھ کپ، جسے پہلے عالمی یوتھ اسکریبل چیمپئن شپ کہا جاتا تھا، کے مقابلے آن لائن منعقد ہوئے اور پاکستان نے مسلسل دوسری مرتبہ ورچوئل چیمپئن شپ کی میزبانی کی۔

دو روزہ فائنل میں ٹاپ 10 کھلاڑیوں نے 13 گیمز کھیلے جن میں 15 سالہ سید عماد علی نے 9 گیمز جیتے اور 329 کے اسپریڈ اسکور کے ساتھ ٹائٹل اپنے نام کیا۔

بھارت کے مادھو گوپال نے بھی 9 گیمز جیتے لیکن وہ دوسرے نمبر پر رہے، تھائی لینڈ کے نپت نے تیسری پوزیشن حاصل کی۔

ساتھ ہی فائنلز میں پہنچنے والے پاکستان کے دوسرے کھلاڑی حشام ہادی خان نے 7 گیمز میں کامیابی حاصل کی اور چوتھے نمبر پر رہے۔

—فوٹو: کوئٹہ گلیڈی ایٹرز ٹوئٹر
—فوٹو: کوئٹہ گلیڈی ایٹرز ٹوئٹر

سید عماد علی اس سے قبل 2018 میں متحدہ عرب امارات میں ہونے والا ویسپا یوتھ اسکریبل کپ بھی جیت چکے ہیں، وہ 2 مرتبہ ویسپا یوتھ کپ جیتنے والے دنیا کے پہلے کھلاڑی بھی بن گئے ہیں۔

عماد، مجموعی طور پر جونئیر لیول پر پاکستان کے لیے تین عالمی اعزازات جیت چکے ہیں جن میں 2 ویسپا ورلڈ یوتھ کپ اور 2019 کی ورلڈ جونئیر اسکریبل چیمپیئن شپ شامل ہیں۔

سید عماد علی کا کہنا تھا کہ دوسری مرتبہ ورلڈ یوتھ ٹائٹل جیتنے پرخوشی ہے، میں نے محنت کی جس کا صلہ ملا۔

انہوں نے کہا کہ فائنلز میں تمام حریف ہی مشکل تھے لیکن بھارت اور تھائی لینڈ کے کھلاڑیوں نے ٹف ٹائم دیا۔

سید عمد علی نے کہا کہ اب ورلڈ اسکریبل چیمپیئن شپ میں عمدہ کارکردگی دکھانے کی کوشش کروں گا۔

فائنلز کے اختتام پر بھارت کو اسپرٹ آف اسکریبل کا ایوارڈ دیا گیا جبکہ ٹورنامنٹ کی بہترین خاتون کھلاڑی کا ایوارڈ سری لنکا کی سندلی ویتھا ناگے کے نام رہا اور ملائیشیا کے ڈریسڈن لم کم عمر ترین کھلاڑی قرارپائے۔

ایونٹ میں 14 ممالک کے 72 کھلاڑیوں نے حصہ لیا تھا اور بھارت سمیت تمام ممالک کے کھلاڑیوں نے ایونٹ کے شاندار انتظامات کو سراہا۔

پاکستان اسکریبل ایسوسی ایشن کے صدر اور پاکستان سپر لیگ ( پی ایس ایل) کی فرنچائز کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے مالک ندیم عمر اختتامی تقریب میں بطور مہمان خصوصی شریک ہوئے۔

ندیم عمر نے کہا کہ اسکریبل کا کھیل دنیا بھر کے کھلاڑیوں کو قریب لاتا ہے، بھارت اور پاکستان کے حالات جتنے بھی کشیدہ ہوں لیکن بھارتی کھلاڑیوں نے کھیل کی اسپرٹ سے سب کے دل جیت لیے۔

ندیم عمر نے ورلڈ یوتھ چیمپیئن سید عماد علی کے لیے ایک لاکھ روپے جبکہ پاکستانی ٹیم کے لیے بھی نقد انعام کا اعلان کیا۔

تقریب کے اختتام پر ندیم عمر اور اسپانسرز کے نمائندوں نے انعامات تقسیم کیے اور اختتامی تقریب کے دوران ایونٹ میں حصہ لینے والے کھلاڑی اور ویسپا کے عہدیداران آن لائن موجود تھے۔