پی ایس ایل کے سیمی فائنل کے لیے چاروں ٹیموں کا فیصلہ

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 2020 کے آخری گروپ میچ میں دفاعی چمپیئن کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی مطلوبہ رن ریٹ پر فتح حاصل کرنے میں ناکامی کے بعد سیمی فائنل کے لیے چار ٹیموں کا حتمی فیصلہ ہوگیا۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں کراچی کنگز کو باآسانی 5 وکٹوں سے شکست ضرور دی لیکن وہ مطلوبہ رن ریٹ حاصل کرنے میں ناکام ہوئی اور ٹورنامنٹ سے باہر ہوگئی جبکہ کراچی کنگز پہلے ہی سیمی فائنل میں جگہ بنا چکی ہے۔

ملتان سلطانز پہلی ٹیم تھی جو کورونا وائرس کے خدشات کے باعث فارمیٹ کو تبدیل کرنے سے پہلے ہی اگلے مرحلے کے لیے کوالیفائی کرلیا تھا اور سیمی فائنل میں جگہ بنالی تھی۔

کراچی کنگز نے گزشتہ میچ میں لاہور قلندرز کو اپنے ہوم گراؤنڈ میں شکست دے کر 11 قیمتی پوائنٹس حاصل کرکے سیمی فائنل میں پہنچنے والی دوسری ٹیم کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

لاہور قلندرز سیمی فائنل میں پہنچنے والی تیسری ٹیم ہے جو پی ایس ایل کی 5 سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ اس مرحلے میں پہنچنے میں کامیاب ہوئی ہے جس کے لیے انہوں نے سرفہرست ملتان سلطانز کو 9 وکٹوں سے شکست دی۔

پوائنٹس ٹیبل کی بات کی جائے تو ملتان سلطانز 10 میچوں میں 6 فتوحات اور صرف 2 ناکامیوں کے ساتھ 14 پوائنٹس کے ساتھ پہلے نمبر پر موجود ہے۔

کراچی کنگز دوسرے نمبر پر ہے جس نے 10 میچوں میں سے 5 میں فتح اور 4 شکست کا سامنا کیا اور 11 پوائنٹس حاصل کیے، لاہور قلندرز نے ابتدائی میچوں میں مسلسل شکستیں کھائیں تاہم اگلے میچوں میں بلے بازوں کی شان دار کارکردگی دے ٹورنامنٹ میں واپسی کی۔

قلندرز نے 10 میچوں میں 5 میں شکست اور 5 کامیابی کا متوازن تناسب رکھا اور 10 پوائنٹس حاصل کیے جبکہ پشاور زلمی نے 10 میچوں میں سے 5 شکست کھائی اور 4 میں فتح حاصل ہوئی۔

ٹورنامنٹ میں دفاعی چمپیئن کی حیثیت سے پہلا میچ کھیلنے والی کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی ٹیم پانچویں نمبر پر رہی جس کے لیے انہیں 10 میں سے 5 میچوں میں شکست اور 4 میں فتح نصیب ہوئی لیکن بدترین رن ریٹ کے باعث پشاور زلمی سے پیچھے رہ گئی۔

سابق چمپیئن اسلام آباد یونائیٹڈ کی ٹیم اس مرتبہ سب سے آخری نمبر پر رہنے والی ٹیم بنی جس کو سب سے زیادہ 6 شکستوں کا سامنا رہا اور صرف 3 میچوں میں کامیابی ملی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ 7 پوائنٹس کے ساتھ سب سے کمزور ٹیم ثابت ہوئی۔

خیال رہے کہ ٹورنامنٹ کے تمام میچز پاکستان کے 4 شہروں میں کھیلے گئے جہاں تماشائیوں کا ہجوم امڈ آیا لیکن کورونا وائرس سے حفاظتی اقدامات کے باعث اسٹیڈیم کو خالی رکھنے کے فیصلے سے قبل کئی میچ بارش کی نذر ہوئے۔

بارش کے باعث لاہور قلندرز کا کوئی بھی میچ متاثر نہیں ہوا جبکہ ملتان سلطانز کے دو میچ باش کے باعث ختم کردیے گئے اور ایک،ایک پوائنٹ ملا اسی طرح، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز، پشاور زلمی اور کراچی کنگز کا بھی ایک،ایک میچ متاثر ہوا اور ایک پوائنٹ مل گیا۔

پی ایس ایل کے دونوں سیمی فائنل قذافی اسٹیڈیم لاہور میں 17 مارچ کو کھیلے جائیں گے جس کا شیڈول واضح ہوگیا ہے۔

ٹورنامنٹ کا پہلا سیمی فائنل سرفہرست ٹیم ملتان سلطانز اور چوتھے نمبر پر آنے والی پشاور زلمی کے درمیان دوپہر 2 بجے کھیلا جائے گا۔

دونوں ٹیموں کا موازنہ کیا جائے تو رواں سیزن میں دومیچوں میں آمنے سامنے آئیں جن میں ملتان سلطانز کامیاب ٹیم ثابت ہوئی، پہلے میچ میں 6 وکٹوں اور دوسرے میچ میں سنسنی خیز مقابلے کے بعد پشاور زلمی کو 3 رنز سے شکست ہوئی تھی۔

دوسرا سیمی فائنل پوائنٹس ٹیبل پر دوسرے نمبر پر موجود کراچی کنگز اور تیسرے نمبر پر براجمان لاہور قلندرز کے درمیان شام 7 بجے کھیلا جائے گا۔

کراچی کنگز اور لاہور قلندرز کے درمیان بھی دو میچ کھیلے گئے اور دونوں ٹیموں نے ایک،ایک میچ جیت کر مقابلہ برابر کردیا اور اب تیسرے مقابلے میں برتری ثابت کرنا ہے۔

لاہور قلندرز نے کراچی کنگز کو پہلے میچ میں 8 وکٹوں سے شکست دی تھی جبکہ دوسرے میچ میں کراچی کنگز نے 10 وکٹوں کے بڑے مارجن سے کامیابی سمیٹ کر سیمی فائنل میں جگہ بنائی تھی۔

پی ایس ایل 2020 کا فائنل سرفہرست دو ٹیموں کے درمیان 18 مارچ کو شام 7 بجے قذافی اسٹیڈیم لاہور میں ہی کھیلا جائے گا۔

error: