کراچی ٹیسٹ دلچسپ مقابلے کے بعد ڈرا، بابر اور رضوان نے شکست سے بچالیا

پاکستان نے بابر اعظم اور محمد رضوان کی شان دار بلے بازی کی بدولت دوسرے ٹیسٹ میچ میں آسٹریلیا کی یقینی فتح کو ڈرا میں تبدیل کردیا، قومی ٹیم نے 506 رنز کے ہدف کے تعاقب میں 7 وکٹوں پر 438 رنز بنائے جبکہ سیریز تاحال بغیر کسی جیت کے برابر ہے۔

نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں کھیلے گئے سیریز کے دوسرے ٹیسٹ میچ کے آخری دن پاکستان نے 192رنز دو کھلاڑی آؤٹ سے اپنی دوسری نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی۔

دن کے آغاز میں عبداللہ شفیق اور بابر اعظم کے لیے پہلا چیلنج محض دو اوورز استعمال ہوئی نئی گیند پر آسٹریلین فاسٹ باؤلرز کا سامنا کرنا تھا۔

دونوں کھلاڑیوں نے دن کی ابتدا میں دفاع انداز اختیار کیا اور آسٹریلین باؤلرز کو وکٹ لینے سے باز رکھا تاہم اسپنرز کے اٹیک پر آنے کے بعد دونوں بلے باز نسبتاً پراعتماد نظر آئے۔

دونوں کھلاڑیوں نے ذمے دارانہ کھیل پیش کرتے ہوئے تقریباً پورے سیشن میں آسٹریلین ٹیم کو وکٹ لینے سے باز رکھا لیکن کھانے کے وقفے سے محض چند اوورز قبل عبداللہ شفیق نروس نائنٹیز کا شکار ہو گئے۔

نوجوان بلے باز نے ناصرف 96رنز کی شاندار اننگز کھیلی بلکہ بابر کے ہمراہ 228 رنز کی ساجھے داری بھی قائم کر کے پاکستان کی میچ ڈرا کرنے کی امیدیں روشن کردیں۔

بابراعظم کو شان دار بیٹنگ پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

واضح رہے کہ آسٹریلیا نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے پہلی اننگز 556رنز 9 کھلاڑی آؤٹ پر ڈکلیئر کردی تھی۔

اس کے جواب میں پاکستانی بیٹنگ لائن مکمل طور پر فلاپ ہو گئی تھی اور پوری ٹیم پہلی اننگز میں 148رنز پر ڈھیر ہو گئی تھی۔

آسٹریلیا نے اپنی دوسری اننگز 97 رنز دو کھلاڑی آؤٹ پو ڈکلیئر کردی تھی اور پاکستان کو فتح کے لیے 506رنز کا ہدف دیا تھا۔

دونوں ٹیموں کے درمیان راولپنڈی میں کھیلا گیا سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ بھی ڈرا ہو گیا تھا اور اب 3 میچوں کی ٹیسٹ سیریز برابر ہے۔