کرونا کا علاج

آخر کار کرونا نے گلی گلی میں ڈیرے جما کر گھروں پر دستک دینا شروع کر دی ہے حکومت کی لا پرواہی بے حسی نان پروفیشنل رویہ کتنا ہے یہ بات اب پرانی ہو گئی ہے اب تو یہ بحث بھی دم توڑ چکی ہے کہ یہ کرونا کو ئی بیماری نہیں ہے یہودی امریکہ چین فارما سوٹیکل کمپنیوں کی اجارہ داری سازش ہے کرونا ایک خوفناک جان لیوا عفریت کی طرح جبڑے کھولے لاکھوں لوگوں کو نگلنے کے بعد بھی اُس کی بھوک نہیں مٹ رہی بلکہ ہر گزرتے دن کے ساتھ اُس کی بھوک اور شکاری اموات کی تعداد خطرناک حدوں کو چھوتی جا رہی ہے وطن عزیز کے معصوم لوگ جو کرونا کو شرارت سازش قرار درہے تھے اب اُن کے اپنے گلی محلوں رشتہ داروں میں لاشوں کے ڈھیر لگنا شروع ہو گئے ہیں تو خواب غفلت سے جاگ کر اب ماننا شروع ہو گئے ہیں کہ یہ تو واقعی جان لیوا بیماری ہے اب آپ کسی دور رشتہ دار عزیز کو فون کریں تو وہ آپ کو طویل فہرست گنوانا شروع کر دے گا فلاں مر گیا فلاں قرنطینہ میں اتنے دن سے ہے فلاں اُس ہسپتال میں ہے فلاں کو ہسپتال میں داخلہ نہیں مل رہا فلاں کو مرنے کے بعد چپکے سے دفنا دیا گیا آپ جس کو چھیڑیں اُس کو کو ئی عزیز دوست رشتہ دار کرونا کے ہتھے چڑھ چکا ہے میرے بہت سارے دوست جو کرونا کا مذاق اڑاتا کر تے تھے جب میں انہیں مشورہ دیتا کہ یار یہ واقعی بیماری خطرناک وبائی مرض ہے جو واقعی جان لیوا ہے تو وہ لاپرواہی سے کہتے نہیں سر ایسی کوئی بات نہیں ہے ایسے جوان جو کرونا آنے کے بعد بھی سڑکوں پر دندناتے پھرتے تھے دفتروں بازاروں میں بنا ماسک سینی ٹائزر کے اکڑ کے چلتے تھے جو ہمارے ماسک یا سینی ٹائزر استعمال کر نے کا مذاق اڑاتے تھے جب اپنے قریبی رشتہ داروں کو اکھڑتی سانسوں جان لیوا کھانسی نہ اترنے والا بخار میں مبتلا دیکھا پھر ایسے مریضوں کو جب ہسپتال لے کر گئے تو داخلہ منع ہے پر ہسپتال نے دروازے کھو لنے سے انکار کر دیا پھر کرونا سے مرنے والے مریضوں کو بہت کم لواحقین کی شرکت سے دفن کر نے کاعمل یہ ساری چیزیں دیکھ کر اب وہ لا پرواہ دوست بھی ہمہ وقت ہاتھ میں سینی ٹائزر یا گلوز منہ پر ٹرپل ماسک پہنے پھرتے ہیں گھروں کو دن میں بار بار جراثیم کش ادویات کا سپرے کر تے نظر آتے ہیں بلکہ دن رات سڑکوں پر گھومنے والے بھی کرونا کے خوف سے گھروں میں دبک پر بیٹھ گئے ہیں تو انہوں نے اپنی شکست تسلیم کر لی بلکہ ان کے لاپرواہی کے غبارے سے ہوا ہی نکل گئی ہے تو وہ مان گئے ہم غلط تھے کرونا تو جنگل کی آگ کی طرح انسانوں کو بھسم کر رہا ہے۔اس حقیقت کے بعد کہ کرونا آگیا اور اِس نے گھروں پر لہرانا شروع کر دیا ہے اور یہ کسی بھی وقت مجھے یا آپ کو ہیلو ہا ئے کہہ بغل گیر ہو سکتا ہے تو اب ہم نے کر نا کیا ہے جب بھی کو ئی مصیبت پریشانی مشکل آجائے تو دو قسم کے ردعمل لو گ کر تے ہیں پہلا گروپ یہ کر تا ہے کہ حل نکالے بغیر خود کو حالات کے بہاؤ پر چھوڑ دیتے ہیں یا خوف میں لپٹ کر دبک جاتے ہیں انتظار کر تے ہیں تقدیر ان کے ساتھ کیا کر تی ہے جو ہو رہا ہے اُس کو ہونے دیتے ہیں یا خوف سے اُن کی عقل شعور شل ہو جاتا ہے دماغ کام کر نا چھوڑدیتا ہے ہاتھ پاؤں پھول جاتے ہیں کچھ کر نے کی پو زیشن میں نہیں ہو تے یا کچھ کر نا ہی نہیں چاہتے یہ غلط طریقہ یا ردعمل ہو تا ہے بلکہ جان لیوا ہو تا ہے ایسی حماقت غلطی سستی کبھی بھی نہیں کر نی چاہیے کیونکہ خدا ئے بزرگ و بر تر نے کیا خوب کہا ہے کہ جو جتنی کو شش کرے گا اُس کو اتنا ہی معاوضہ ملے گا اِس لیے ہر انسان کو اپنی کو شش عقل دانائی سے مشکل یا وبا سے نکلنے بچنے کی کو شش کر نی چاہیے دوسرا گروپ اچھا مثبت ہو تا ہے جو کسی بھی مشکل بیماری پریشانی میں چھپ کر الگ تھلگ بیٹھ نہیں جاتا بلکہ وہ دماغی کھڑکیاں کھو ل کر یا عقل مند لوگوں سے مشاورت کے بعد اُس بیماری مشکل کا حل تلاش کر تے ہیں پھر ایسے لوگوں کی خدا بھی مدد کرتا ہے موجودہ کرونا کے سیاہ بادلوں میں جب ہر بندہ خوفزدہ ہے تو وہ لوگ جن کو ابھی کرونا نہیں ہوا انہوں نے کیا کر نا ہے وہ یہ ہیں پہلی بات خدا پر مکمل بھروسہ رکھنا ہے عبادت پر دھیان عبادت کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ آپ ڈپریشن خوف سے آزاد ہو جاتے ہیں دوران عبادت قرآن مجید کی تلاوت کے دورن کے آپ کے اندر سے مختلف غدود ایسی رطوبات کا اخراج کر تے ہیں ایسے کیمیکلز پیدا ہو تے ہیں جو ڈپریشن خوف کو دور کر نے کے ساتھ ساتھ امیون سسٹم میٹابولزم کو بھی طاقت ور کر تے ہیں آپ کا دفاعی نظام باطنی اور ظاہری طور پر مضبوط ہو تا ہے آپ کاAURAبھی بہت مضبوط ہو تا ہے آپ کی روح طاقتور ہو تی ہے جب روح باطن اندرونی نظام مضبوط ہو نگے تو آپ بیماری کا مقابلہ اچھے طریقے سے کر سکتے ہیں پھر خدا سے دعا کے بعد اُس کے کر شمے بھی آپ دیکھتے ہیں عبادت ذکر اذکار کے بعد اہم بات خوب جی بھر کر سونا اپنی زندگی کا حصہ بنا لیں جب ہم آٹھ گھنٹے یا زائد نیند لیتے ہیں تو ہمارے جسم کے اندرونی نظاموں اور عضلات اعصاب کی ٹوٹ پھوٹ کی مرمت ہو تی ہے جاگنے سے ہمارے مختلف اعضا جسمانی نظام کام کر تے ہیں سونے سے انہیں ری چارج ہو نے کا موقع ملتا ہے فریش ہو کر دوبارہ کام کرنے کے قابل ہو تے ہیں تو نیند کو جی بھر کر پورا کر یں آپ کا جسم مضبوط ہو کر تمام نظام ایکو ریٹ ہو کر بیماری کا بھرپور طریقے سے مقابلہ کر سکیں گے۔ اگلی بات متوازن خوراک کا استعمال کریں پھلوں کو اپنی غذا میں شامل کر یں‘ دیسی مرغی دیسی انڈے استعمال کر یں بکرے یا گائے کا تندرست گوشت استعمال کریں تازہ پھلوں کے ساتھ ساتھ باداموں کو ہر صورت میں اپنی غذا کا حصہ بنا ئیں کیونکہ انسانی صحت کا دارومدارعضلات اعصاب غدودوں کے بہتر کام کرنے پر ہے بادام عضلات کو خوب طاقت پہنچاتے ہیں انہیں خشک یا بھگو کر چھلکا اتار کر استعمال کریں ادرک دار چینی لہسن سنا مکی شہد کے قہوہ جات بھی امیون سسٹم کو توانا رکھنے میں اہم کردار ادا کر تے ہیں اِن کو وقفے وقفے سے استعمال کریں جو لوگ مٹن دیسی مرغی کا شوربہ افورڈ نہیں کر سکتے وہ کالے چنے کا خوب استعمال کریں اُس کے شوربے کو متبادل کے طور پر استعمال کریں ماسک کو اپنی زندگی کا لازمی حصہ بنا لیں سلام گلے ملنے سے مکمل پرہیز کریں اگر ملیں تو فوری خود کو دھولیں یا سینی ٹائزر استعمال کریں ایسی متوازن خوراک استعمال کریں جس سے آپ کا معدہ خراب نہ ہو اگر معد ہ خراب ہو گیا تو خوراک فائدے کی بجائے نقصان دینا شروع کر دے گی جتنی ورزش یا واک آپ کرسکتے ہی وہ ضرور کریں تاکہ جسم کے تمام نظام صحت مندی سے اپنے کام سر انجام دیں۔ اب وہ لوگ جن کو کرونا ہو گیا ہو تو وہ کیا کریں پہلی بات خوف نہ لیں ڈپریشن میں نہ جائیں 98فیصد لوگ پوری دنیا میں صحت مند ہو رہے ہیں آپ بھی ان میں شامل ہو نگے انشاء اللہ پہلا کام خوفزدہ نہیں ہو نا دوسرا ان اذکار کو فوری شروع کریں جو بیماری کو کم کرنے میں معاون ہو تے ہیں۔ یارقیب ُ یا حفیظ 500۔ یاسلام ُ یا مومنُ یا اللہ 500۔یاحیی ُ یا قیوم یا لطیف 500یہ اذکار جن کو کرونا نہیں وہ بھی کریں پانی پر سورہ طارق 11بار سورہ تغابن 11بار روزانہ دم کر کے پیتے رہیں صبح دوپہر شام سورہ رحمٰن کی تلاوت بھی آنکھیں بند کر کے خانہ کعبہ کا تصور کر کے سنتے ہیں۔ جن کو بخار ہو تا ہے ہو ہر پانچ گھنٹے کے بعد پیناڈول دوگولیاں لیں بخار کو 100سے اوپر نہ جانے دیں دیسی مرغی یا کالے چنے کا شورہ دن میں تین بار لیں کیلشیم سی اے سی کی گولی وٹامن ڈی کے ساتھ سربیک زی کو بھی اپنی خوراک کا حصہ بنا لیں ان کے علاوہ پہلے تین دن ائیزو مکس 500صبح شام ایک کیپسول لیں تین دن کے بعد دن میں ایک کیپسول لیں اب جن کو کرونا پکڑ لیتا ہے ان کے ساتھ ایک بات بہت پریشان کن ہو تی ہے وہ ہیوی کھانسی اور پھیپھڑوں کی انفیکشن کیونکہ یہ موذی وائرس پھیپھڑوں کو جاکر برباد کر کے انسان کی سانسیں چھین لینے کی کو شش کر تا ہے ایسے مریضوں کو دن میں جب بھی سانس میں مشکل آئے سٹیم لینی چاہیے سٹیمر خرید لیں زیادہ مہنگا نہیں ہے سٹیمر سے آپ کو سانس کی پرابلم میں بہت آسانی ہو گی فوری طور پر کرونا کی صورت میں خود کو گھر والوں سے الگ کر لیں اپنے کا م خود کریں تا کہ آپ کے پیارے کرونا سے محفوظ رہیں۔ کھجور بادام خشک میوہ جات اپنی خوراک میں شامل کریں انشاء اللہ آٹھ دن کے اندر آپ اِس موذی مرض سے نجات پا جائیں گے ٹوٹکوں پر اپنا وقت ضائع بلکل نہ کریں اگر آپ نے ایک ہفتہ ٹوٹکوں میں ضائع کر دیا تو کرونا آپ کے پھیپھڑوں کو برباد کر چکا ہو گا اِس لیے فوری طور پر درج بالا ہدایات پر عمل کریں خدا ئے بزرگ و برتر کے خاص فضل سے آپ انشا ء اللہ کرونا کے مرض سے محفوظ ہو نگے یا نجات پا جائیں گے اللہ تعالی آپ سب کو اِس بلا سے محفوظ رکھے آمین۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: