امریکی فضائی مشقوں میں پاکستان اور اسرائیل کی شمولیت

واشنگٹن -پاک فضائیہ امریکا، متحدہ عرب امارات اور اسرائیلی لڑاکا طیاروں کے ساتھ رواں ماہ نیواڈا میں مشترکہ فوجی مشقوں میں شرکت کرے گی۔ دی ایوی ایشنسٹ میگزین کے مطابق پاکستان کے 6 اے ایف ایف 16 سی/ ڈی بلاک 52+ کمبیٹ طیارے پہلے ہی امریکا میں نیواڈا کے نیلس ایئر فورس بیس پر مشترکہ گرین اور ریڈ فلیگ مشقوں میں حصہ لینے کے لیے پہنچ چکے ہیں۔ امریکی ایئر فورس کے مطابق ریڈ فلیگ سے مراد فضا سے فضا میں تربیتی مشق ہے، جس کے دوران شرکاء ہوا بازی میں مہارت حاصل کرنے کے لیے ایک ساتھ ڈوگ فائٹ کرتے ہیں جبکہ گرین فلیگ میں مشترکہ ہوائی، زمینی اور الیکٹرانک خطرات سے لڑنے کی تربیت دی جاتی ہے۔ 2016 میں امریکی ایئر فورس نیواڈا میں 4 ریڈ فلیگ مشقیں کررہی ہے، ان مشقوں کا پہلا مرحلہ جنوری تا فروری، دوسرا مرحلہ فروری تا مارچ اور تیسرا مرحلہ جولائی میں ختم ہوا جبکہ ان مشقوں کا رواں سال کا چوتھا اور آخری مرحلہ 15 اگست سے شروع ہوگا، جس کا اختتام 26 اگست کو ہوگا۔

پاک فضائیہ امریکا، پاکستان، متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے ساتھ 15 تا 26 اگست تک تربیتی مشقوں میں شرکت کرے گی۔ اسرائیلی میڈیا کے مطابق اسرائیل مشقوں میں حصہ لینے کے لیے کارگو اور جیٹ دونوں طیارے بھیج رہا ہے۔ 2015 میں ریڈ فلیگ مشقوں کے بعد امریکی ایئر فورس کے کمبیٹ ٹریننگ اسکواڈرن کمانڈر کرنل جیفری ویڈ نے اعلان کیا تھا کہ ریڈ فلیگ کے دوسرے اور چوتھے مرحلے میں پاکستان، متحدہ عرب امارات، آسٹریلیا، ترکی، اسپین اور اٹلی کے فائٹرز کو بھی شامل کیا جائے گا۔ اس حوالے سے اسرائیلی ملٹری کا کہنا تھا کہ ان کی ائیر فورس صرف مہمان کے طور پر مشقوں میں حصہ لے گی جبکہ دو مسلمان ممالک کو ان مشقوں میں شامل کرنے کا فیصلہ میزبان ملک امریکا نے کیا۔ گزشتہ سال ایک اسرائیلی عہدے دار نے کہا تھا کہ یہ مشقیں اسرائیل کوسفارتی حکمت علمی کو تشکیل دینے کے لیے ایک موقع فراہم کریں گی :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *