بارش کے بعدکراچی ایشیا کے سب سے بڑے جوہڑ میں تبدیل ، مراد علی شاہ کا چائے پراٹھے کھانے کا اعلان !

pm sind

کراچی کے مختلف علاقوں میں وقفے وقفے سے ہلکی اور تیز بارش جاری ہے ۔ کئی علاقوں میں ایک فٹ تک پانی جمع ہوگیا۔ ٹریفک کی روانی میں مشکلات درپیش ہیں۔ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ صورتحال کا جائزہ لینے عبداللہ ہارون روڈ پہنچ گئے،انہوں نے انتظامیہ کو ہدایت دی کہ بارش کا پانی فوری نکالا جائے۔ کراچی میں جمعے کی شام سے برسات کی جھڑی لگی ، بجلی غائب ہونے، سڑکوں پر پانی جمع ہونے ،ٹریفک جام اور انتظامیہ کی نااہلی نے باران رحمت کو شہریوں کے لیے زحمت میں بدل دیا۔مختلف علاقوں میں کرنٹ لگنے اور دیگر حا دثات میں 7 افراد جاں بحق ہوگئے۔ کلفٹن میں دو تلوار سے 3تلوار تک سڑک پر ایک فٹ سے زیادہ برساتی پانی جمع ہوگیا۔ کئی گھنٹے تک ہلکی او ر تیز بارش کا سلسلہ جاری رہا،اس دوران جہاں بجلی کے بحران نے سر اٹھایا ،وہیں دھابیجی پر پائپ لائن پھٹنے سے شہر کو پانی کی فراہمی میں بھی رکاوٹ ہوئی۔دفتر سے گھر جانے والے شہریوں کو اس وقت اکتاہٹ کا سامنا کرنا پڑا جب منٹوں کا سفر گھنٹوں میں بدل گیا۔ کئی شہریوں کی گاڑیاں اور موٹرسائیکلیں خراب ہوئی، مجبوراً انہیں گاڑیاں سڑکوں پر ہی چھوڑکر جانا پڑا۔ جہاں بارش نہیں ہورہی وہاں بھی سڑکوں پر بارش کا پانی اب تک جمع ہے۔ پانی کے نکاس کا اب تک مناسب انتظام نہیں کیاجاسکا۔بلدیہ کے ملازمین اور افسران کہیں نظر نہیں آئےجس کی وجہ سے صبح سویرے نکلنے والوں کو پریشانی کا سامنا رہا۔ کراچی والوں کی اس پریشانی کا آغاز گزشتہ شب ہوا۔

کورنگی کراسنگ، نارتھ کراچی، نیو کراچی، لیاری اور دیگرعلاقوں میں بجلی اب تک بحال نہ کی جاسکی۔کراچی میں بارش کے بعد کے الیکٹرک کے 400 فیڈرز ٹرپ کر گئے تھے۔ترجمان کےالیکٹرک بارش سےمتاثر400 میں سے350فیڈرزبحال کردیے،کراچی ایئرپورٹ پر بجلی کی فراہمی بحال کردی گئی،پی ای سی ایچ ایس،کلفٹن،ایف بی ایریااورڈیفنس میں بھی بجلی بحال کر دی گئی۔ ترجمان کے الیکٹرک کا مزید کہنا ہے کہ بارش کی دوسری لہر سے صبح کے وقت چند علاقے متاثر ہوئے، گارڈن، کلفٹن، ڈیفنس، لیاری، گزری کے چند متاثرہ پی ایم ٹیز پر کام جاری ہے،متعدد متاثرہ پی ایم ٹیز بحال کردئےگئے ہیں،باقی جلد بحال کردیئے جائیں گے۔گھارو کےمتاثرہ پمپنگ اسٹیشنز کو بجلی کی فراہمی بحال کی جارہی ہے۔ کراچی میں بجلی جاتے ہی دھابیجی میں پانی کی 72 انچ قطر کی پائپ لائن پھٹ گئی ۔ کراچی کو 196ملین گیلن پانی فراہم نہ کیا جاسکا۔ترجمان کا کہنا ہے واٹربورڈ کےپمپنگ اسٹیشنوں کی بجلی بار بار بند کیے جانے سے پائپ لائن پھٹی۔ ترجمان واٹر بورڈ کا کہنا ہے کہ دھابیجی گھارو پمپنگ اسٹیشن پربجلی کی آنکھ مچولی جا ری ہے،کراچی کو کل سے آج تک 80 کروڑ گیلن پانی فراہم نہ کیا جاسکا، کراچی میں قائم متعدد پمپنگ اسٹیشنز کی بجلی بھی معطل ہے، شہر میں جاری پانی کا بحران مزید سنگین ہوگیا، شہری پانی احتیاط سے استعمال کریں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *