اچھا تو جناب بھی گلوکار ہیں ۔۔

razia syed

غلطی سے میں ایک چھوٹا موٹا گلوکار ہوں لیکن قابل افسوس بلکہ قابل مذمت یہ ہے کہ کوئی بھی مجھے گانے کا موقع نہیں دیتا ۔ کوئی میرے دل سے پوچھے کہ موسیقی کے اس متوالے کے نازک دل و دماغ پر کیا گذرتی ہے ؟ بھلا رات دن روز بروز اتنے ٹی وی چینلز لانچ ہوتے ہیں پر کوئی بھی میرے گانوں کی کیسٹ لانچ یعنی ریلیز کرنے کو تیار ہی نہیں ہوتا ۔
خیر آپ کو ایک قصہ سناتا ہوں کہ میں نے بہت سے موسیقی کے مقابلوں میں حصہ لیا اور ہار میرا مقدر بنی لیکن میں ہمت ہارنے والوں میں سے نہیں ہوں ۔ میری ماما نے مجھے بتایا تھا کہ بچپن سے ہی میں بہترین موسیقار تھا ۔ اتنی سر میں روتا تھا کہ پورے سات محلوں تک میری آواز جایا کرتی تھی اور سب کے سب گہری نیند سے بیدار ہو کر اٹھ جاتے تھے ۔ خیر میں ایک مقابلے میں گیا جہاں میں نے اپنے فن کا مظاہرہ کیا ۔ ابتدا میں تمام ججز کو میری پرفارمنس بہت پسند آرہی تھی لیکن ایک خاتون جج میری طرف بہت غصے سے دیکھ رہی تھیں ۔ میں گانا گا رہا تھا تو اسکے دوران ہی مجھے انھوں نے کچھ اور سنانے کو کہا ۔
میں نے کہا ’’ جناب میں آپ کو ’’میش اپ ‘‘ سناتا ہوں وہ آپ کو ضرور پسند آئے گا ۔‘‘اب تینوں ججز اس بات پر آمادہ ہو گئے کہ میں میش اپ ہی سنائوں ۔ خیر میں نے شروع کیا
’’جے جے بجرنگ بلی
توڑ دے دشمن کی گلی اپنا پرایا جو ملے جھپی لے لے لے
لے لے لے لے ہائے تو سیلفی لے ‘‘
اسکے ساتھ ہی میں نے ایک اور گانا گایا تاہم میں نے ان پر واضح کر دیا کہ میں صرف سلمان خان کا ہی فین ہوں لہذا اگلا گانا بھی انہی کا ہے ۔
’’پیار کی ماں کی پیار کی ماں کی آج تو پوجا کرنی ہے
ہائے چاند کو چڑھ گئی چربی
سورج بھی لگا بکنے عربی
پیار کی ماں کی ۔۔ ‘‘
مجھے سمجھ میں نہیں آرہا تھا کہ سلمان خان کے اتنے ایکشن گانے کے بعد بھی ان سب کا موڈ کیوں زیرو کے بلب کی طرح آف ہے ؟ آخر ایک صاحب بولے ’’بھائی میاں یہ گانا اکشے کمار پر فلمایا گیا ہے کریکٹر ڈھیلا پر نہیں ۔ خیر آپ کا بھی قصور نہیں کیوں کہ مجھے تو آپ کے تمام اسکرو ڈھیلے نظر آرہے ہیں ۔ اچھا گانے کو چھوڑیں یہ بتائیں ، موسیقی کے بارے میں آپ جانتے کیا ہیں ؟
بس جناب اب کیا میری شامت ہی آگئی انھوں نے مجھ سے ٹوکویں پوچھنے شروع کر دئیے ’’ آپ انڈیا کے کوئی سے دو مشہور گلوکاروں کے نام بتائیں ۔‘‘ میں نے فورا کہا ’’ لتا کشور اور رفیع منگیشتر ‘‘ ’’ ہیں جج صاحب کی آنکھیں پھیل گئیں کیا ؟ بھائی میں نے دو نام پوچھے ہیں چار گلوکاروں کا نہیں پوچھا نہ ہی ان کے سر نیم تبدیل کرنے کو کہا َ‘‘
آج تو مجھے لگ رہا تھا کہ بہت ہی برا دن ہے اتنی دیر سے خاموش بیٹھی خاتون بولیں ’’ چلئیے احسن آپ ہمیں اپنے ملک کی موسیقی کے بارے میں بتائیں کہ ملکہ ترنم نور جہاں کون تھیں ؟ ‘‘
’’نورجہاں ، میڈم نور جہاں وہی تھیں ملکہ جن کے لئے بادشاہ جہانگیر نے مقبرہ بنوایا تھا وہ لاہور میں ہے میں نے دیکھا ہوا ہے بہت اچھا پکنک پوائنٹ ہے ۔ ‘‘
’’بس تان سین کی اولاد ہم ہاتھ جوڑتے ہیں آپ کے سامنے.... آپ لوگ صرف میوزک کی ماں بہن ایک کر سکتے ہیں گا نہیں سکتے ۔ ‘‘
تمام ججوں نے یہ جملہ کیوں کہا مجھے آج تک نہیں پتہ چلا کہ مجھے اس مقابلے میں زیرو کیوں ملا ، ہاں اگر آپ کو پتہ ہوکہ ملکہ ترنم نور جہاں کون تھیں تو مجھے بھی بتائیے گا میں تب تک گٹار پر ایک گانے کی دھن ترتیب دے لوں ۔ ‘‘

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *