بین الاقوامی قانون: وائٹ ہاؤس کے پاس شام میں داعش کو نشانہ بنانے کا کوئی جواز نہیں

obama_rosegardenصدر اوباما کو یقین ہے کہ ان کے پاس اپنے ملک کے قانون کے مطابق شام پر حملہ کرنے کا اختیار موجود ہے۔ لیکن تاحال ان کے پاس کوئی وضاحت نہیں ہے کہ ایسا حملہ بین الاقوامی قانون کے مطابق کس طرح درست ہو گا۔
وائٹ ہاؤس کے پاس اپنے ان ناقدین کیلئے جو یہ جاننا چاہتے ہیں کہ اوباما انتظامیہ بین الاقوامی قانون کے تحت کس طرح شام میں آئی ایس آئی ایس پر حملہ کرنے کا جواز فراہم کر سکتی ہے،کا یہ جواب ہے کہ ’’جب کبھی ہم حقیقتاً ایسا کریں گے تو ہم اس کا قانونی جواز بھی اسی وقت فراہم کر دیں گے۔‘‘
اوباما انتظامیہ اس سوال کا تفصیلی جواب بھی دے چکی ہے کہ وہ یہ کیوں سمجھتی ہے کہ اس کے پاس شام پر حملہ کرنے کا قانونی جواز موجود ہے: اس کا دعویٰ ہے کہ اسے کانگرس سے بھی اجازت لینے کی ضرورت نہیں کیونکہ9/11کے مجرموں کے خلاف فوجی قوت کیلئے 2001ء میں لی جانے والی اجازت اور 2002ء میں صدام کو معزول کرنے کیلئے لی جانے والی اجازت امریکہ شام تنازعے میں بھی حملے کی اجازت فراہم کرتی ہے۔تاہم نیویارک ٹائمز کے مطابق مذکورہ بالا دونوں اجازتیں’’مبہم‘‘ اور ’’ناکافی‘‘ ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *