نئے ڈی جی آئی ایس آئی کے نام پر غور شروع، اعلان آئندہ ہفتے متوقع

پاکستان کے سب سے اہم خفیہ ادارے انٹر سروسز انٹیلی جنس کے نئے سربراہ کے نام پر غور شروع کر دیا گیا ہے۔ جس کا اعلان آئندہ ہفتےISI متوقع ہے۔ اگر چہ اسی دوران یا اس سے قبل پانچ اہم ترین فوجی مناصب پر بھی نئی تقرریاں ہونی ہیں مگر پاک فوج میں آئی ایس آئی کے سربراہ کی تقرری خود فوجی سربراہ کے بعد سب سے بڑی تبدیلی سمجھی جاتی ہے۔ دارالحکومت کے باخبر ذرائع کے مطابق برّی فوج میں پانچ نئے لیفٹنینٹ جنرلز کی تعیناتی کا اعلان بھی اِنہی دنوں میں کیا جائے گا۔ جنہیں منگلا، گوجرانوالہ،پشاوراور کراچی کے کور کمانڈرز کے اہم ترین مناصب پر فائز ہونا ہے۔ اگر آئی ایس آئی کے نئے سربراہ کی تعیناتی سے قبل فوجی سربراہ بعض میجر جنرلز کو ترقی دے کر لیفٹنینٹ جنرل بناتے ہیں تو اس کا مطلب یہ ہو گا کہ وہ ڈی جی آئی کے اہم ترین منصب پر اُن نئے ترقی پانے والے فوجی افسران پر غور کا راستہ کھلا رکھنا چاہتے ہیں۔ واضح رہے کہ اس وقت دستیاب ناموں پر وزیراعظم اور فوجی سربراہ کے درمیان باہمی تبادلے میں نظر ثانی کی ”زحمت“ اٹھانے کے خدشات زیادہ ہیں۔ ملک میں پیدا ہونے والے حالیہ سیاسی بحران میں غلط ہی سہی بعض انگلیاں بعض فوجی افسران پر اٹھتی رہی ہیں۔ جس پر پاک فوج کے ترجمان کو درست ہی سہی وضاحت کرنی پڑی ہے۔لہذا پاک فوج کے اندرہی نہیں، باہر کے سیاسی اور عوامی حلقوں میں بھی ڈی جی آئی ایس آئی کے لئے نئے نام کے انتخاب پر بہت ہی دلچسپی لی جارہی ہے۔
واضح رہے کہ آئی ایس آئی کے سربراہ کی تعیناتی اصولی طور پر وزیراعظم کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ جس میں فوجی سربراہ کی رائے کو ایک خاص اہمیت دی جاتی ہے۔ چناچہ جی ایچ کیو اور وزیراعظم ہاؤس کے درمیان اِن دنوں صلاح مشورے جاری ہیں۔اور اگلے کچھ ہی دنوں میں اس معاملے پر وزیر اعظم اور فوجی سربراہ کے درمیان اہم ملاقات متوقع ہے جس کے بعد فوج میں نئی ترقیوں، تعیناتیوں، تبادلوں اور تقرریوں کا عمل شروع ہو جائے گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *