دوست ہو تو ایسا

dost

کہاجاتا ہے کہ اچھے دوست آپ کو احمقانہ حرکتیں اکیلے نہیں کرنے دیں گے بلکہ آپ کے ساتھ شامل ہوں گے۔۔بہت سے لوگ اپنی زندگیوں میں دوستی کا حلقہ بہت محدود رکھتے ہیں ،ایسے لوگوں کے پاس یہ آپشن نہیں ہوتا کہ وہ اچھے بُرے وقت میں کسی سے رابطہ کر سکیںیا فون کرکے اپنے جذبات و احساسات بانٹ سکیں ،ایسے لوگوں کے مشکل وقت میں کام آنے والا کوئی نہیں ہوتا ،ان کی زندگی قابلِ رحم ہوتی ہے،دوسری طرف ایسے لوگ بھی ہیں جن کے دوستو ں کی فہرست لمبی ہوتی ہے وہ جہاں جاتے ہیں ویرانے آباد کر لیتے ہیں لوگ ان کا انتظار کرتے ہیں ،ان کے ساتھ وقت گزارنا پسند کرتے ہیں۔اورآپ کو ایسے لوگ بھی دکھائی دیں گے جو دوستی کی حقیقت ماننے سے ہی انکاری ہوتے ہیں،ایسے لوگو ں سے سوال یہ ہے کہ اربو ں کی آبادی میں وہ ایسے چند لوگ کیسے تلاش کریں گے جو اُن کے غم بانٹ سکیں ،اُن کج خوشی غم میں اُن کا ساتھ دے سکیں ،کوئی ایسا شخص جو با لکل آپ جیسا ہو۔۔ہم اکثر یہ بات کہتے ہیں کہ دنیا بہت خود غرض ہے،اگر ایسا ہی سمجھتے رہیں گے تو وہ لوگ ہمیں کبھی نہیں مل پائیں گے جو ہمارے ساتھ ہوں اور ہر طرح کے حالات میں ہمارا ساتھ دے سکیں ۔اللہ کریم نے انسان کو بہت سے رشتے دئیے ہیں لیکن ان تمام رشتوں میں صرف دوستی ایسا رشتہ ہے جسے بنانے کے لیئے ذات پات،بلڈ گروپ اور طبقاتی کشمکش راستے کی دیوار نہیں بنتی ،یہ رشتہ صرف محبت اور چاہت کی بنیاد پر قائم ہوتا ہے۔جب آپ پریشان ہوتے ہیں تو یہ واحد رشتہ ہے جو سب سے پہلے آپ کی آنکھوں سے دل کا حال جان لیتا ہے۔آپ کو کوئی مسلہء درپیش آئے تو یہی دوست سب سے پہلے آگے بڑھ کر آپ کے مسئلے کا حل نکالتے ہیں ،یہی دوست آپ کو ہنساتے ہیں ،آپ کو خوش کرنے کی کوشش کرتے ہیں ،انسان جب اپنی گزشتہ زندگی پر نظر دوڑاتا ہے تو یہ دوست ہی ہوتے ہیں جوماضی کے پردے پر نمودار ہو کر بتاتے ہیں کہ وہ ہرغمی اور خوشی کے لمحے میں آپ کے ساتھ تھے،ہمارے ارد گرد بے شمار لوگ ہوتے ہیں لیکن واقعی ساتھ ہونے کا احساس دلا نے والے صرف دوست ہی ہوتے ہیں ۔دوستی ایک ایسا بزنس ہے جس میں جتنی بھی انوسٹمنٹ کی جائے وہ سود سمیت آپ کو واپس مل جاتی ہے۔اسی دوستی کا ایک پہلو یہ بھی ہے کہ چاہے آپ بے شمار دن رات ساتھ گزاریں ،ہر لمحہ آپس میں بانٹیں لیکن اگر آپ کے بیچ یقین اور اعتماد نہیں تو یہ تعلق بے کار ہے۔پرانے دوست ایسی کتاب کی مانند ہوتے ہیں جنہیں آپ جب بھی پڑھنے بیٹھیں تو مختلف احساسات و جذبات اور یادوں کے در واء ہو کر آپ کو تازہ دم کر جاتے ہیں ۔کہا جاتا ہے کہ دوست زندگی میں نہیں ملتے بلکہ زندگی دوستوں میں ملتی ہے۔ایک اچھے دوست میں آپ کو درج ذیل خوبیاں نظر آئیں گی۔
ٌٌ*ایساشخص جو ہر حال میں آپ کی مدد کو تیار رہتا ہے
*جو ہر حال میں آپ پر یقین کرتا ہے اور کبھی خود سے آپ کے بارے میں کوئی رائے قائم کرنے کی کوشش نہیں کرتا
*جو کبھی آپ کو نیچا نہیں دکھاتا اور آپ کے جذبات مجروح نہیں کرتا
*جس کی سنگت میں آپ طمانیت محسوس کرتے ہیں
ٌ*جو قابلِ بھروسہ ہو،اور مشکل حالات میں بھی جس کا بھروسہ کبھی متزلزل نہ ہو
ٌ*ایسا شخص نہ چاہتے ہوئے بھی آپ کے ساتھ ہنسے
*جو آپ کو مسکرانے پر مجبور کر دے
*جو ہر لمحہ آپ کو میسر ہو
*آ پ روئیں تو وہ بھی آپ کے ساتھ رونے کو تیار ہو جائے
آپ کو بھی اپنے دوست کے لیئے ایسے ہی خلوص کا مظاہرہ کرنا ہوگا کہ اسے وقت دیں ،اس کی ضرورت اس سے دریافت
کرتے ر ہیں اور یہ بتاتے رہیں کہ آپ اس کے بارے میں کیسے جذبات رکھتے ہیں ۔
مخلص دوست کی پہچان آج کے دور میں انتہائی مشکل کام ہے،کیوں کہ دوست ہوتا نہیں ہر ہاتھ ملانے والا ،کسی کو موقع مت دیں کہ وہ آپ کے جذبات سے کھیلے،دوست بنانے اوردوستی نبھانے کے اصولوں سے واقفیت حاصل کریں اور اچھے دوست کے ساتھ زندگی کے خوشگوار لمحات سے لطف اندوز ہوں ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *