بدقسمت شہزادی سیتا وائٹ اور عمران خان کی کہانی...پہلی قسط

sita

بشکریہ وینیٹی فائر میگزین نیویارک

وکی وارڈز کی تحقیق کے مطابق، جب برطانیہ کے مرحو م صنعتکارلارڈ گورڈن وائٹ کی تینتالیس سالہ بیٹی، سیتا وائٹ یکم مئی کو سانتا مونیکا میں اپنی یوگا کلاس کے دوران فوت ہوئی، اس کی زندگی مکمل طور پر بکھری ہوئی تھی۔ اس کا سبب کچھ تواس کے زیر استعمال ادویات اور اس کے مشکوک اور بد اخلاق مالی مشیران تھے اور کچھ پاکستانی سیاستدان عمران خان (وہی عمران کان جن کی اب گولڈ سمتھ کی وارثہ جمیما سے طلاق ہو چکی ہے)سے ہونے والی اس کی بچی تھی۔ پھر وہ تلخ لڑائی بھی تھی جو اس کے باپ کی دولت کے بڑے حصے کے معاملے پر اس کی اپنے سوتیلے بھائی اور حیرت انگیز حد تک نوجوان سوتیلی ماں کے ساتھ چل رہی تھی۔
اس کہانی کا آغاز کچھ یو ں ہوا کہ عمران اور جمیما کی شادی 1996ء میں لندن میں ہوئی جبکہ سیت وائٹ اپنی بیٹی ٹیرن کے ساتھ1995ء میں منظر پر آئی تھی۔ اپنی وفات سے ذرا پہلے سیتا نے خان کو ایک خط لکھا جس میں اس نے ۱یک کروڑ امریکی ڈالر کا مطالبہ کیا۔لیکن عمران نے اس کو یہ رقم نہ بھیجی۔
اتوار کے روز، 24مئی کی ایک شاندار گرم سہ پہرکو لاس اینجلس کے سینٹ مونیکا کیتھولک چرچ میں سیتا وائٹ کی آخری رسومات ادا کی گئیں۔ سیتا، عظیم صنعتی گروپ ہینسن پی ایل سی کی امریکی شاخ کے سربراہ لارڈ گورڈن وائٹ مرحوم کی 43سالہ بیٹی تھیں۔ 13مئی کی صبح، سیتا، سانتا مونیکا میں مرکزی شاہراہ پر واقع یوگا ورکس سٹوڈیو میں 9:15پر شروع ہونے والی کلاس سے ذرا پہلے فوت ہو گئیں۔وہ وہاں اپنی سوتیلی ماں وکٹوریہ وائٹ او گاراکے ہمراہ آئی تھیں جو کہ حیرت انگیز حد تک سیاہ بالوں والی 41سالہ خاتون اور سابق ماڈل تھیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *