پاکستان دہشت گردوں کی سرپرستی کر رہا ہے، امریکی رپورٹ

pentagonامریکی محکمۂ دفاع نے اپنی ایک نئی رپورٹ میں الزام لگایا ہے کہ پاکستان نے بھارت اور افغانستان کے خلاف شدت پسند تنظیموں کا استعمال ابھی بھی جاری رکھا ہے اور یہ پورے خطے کے استحكام کے لیے خطرہ بنا ہوا ہے۔
پینٹاگون سے جاری کی جانےوالی اس رپورٹ کے مطابق پاکستان ان پراکسی فورسز یا پوشیدہ طاقتوں کا استعمال افغانستان میں اپنے گھٹتے ہوئے اثر رسوخ کی وجہ سے اور بھارت کی بہتر فوجی طاقت کے خلاف حکمتِ عملي کے طور پر کر رہا ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی سرحد کے اندر چھپے طالبان اب بھی افغانستان میں حملے کر رہے ہیں اور یہ پاکستان افغانستان دوطرفہ تعلقات کے لیے مشکلیں پیدا کر رہا ہے۔
رپورٹ میں نریندر مودی کی تاج پوشی کے وقت افغانستان کے ہرات شہر میں بھارتی كونسلیٹ پر حملے کا بھی ذکر ہے۔ رپورٹ کے مطابق نریندر مودی ہندو قوم پرست تنظیموں کے قریب مانے جاتے ہیں اور ممکن ہے کہ اسی وجہ سے ان کی تاج پوشی کے وقت یہ حملہ ہوا۔ اس حملے کا الزام لشکر طیبہ پر لگا تھا۔
رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان دہشت گردی کے خلاف تعاون جاری ہے اور تحریک طالبان پاکستان اور غیر ملکی جنگجوؤں کے خلاف پاکستانی فوج کو کامیابیاں بھی ملی ہیں۔  رپورٹ کے مطابق پاکستان نے افغانستان کے ساتھ تعلقات بہتر کرنے کی کوششیں کی ہیں لیکن کابل اور اسلام آباد ابھی تک ایک دوسرے کو شک کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *