جنرل راحیل کو متنازعہ بنایا جا رہا ہے ، پرویز مشرف کی وضاحت

ae

لندن ۔ آل پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ پرویز مشرف نے کہا ہے کہ یہ لوگ بات کو اچھال کر جنرل راحیل کو متنازعہ بنا رہے ہیں،میر ے پاس ہر چیز آرمی کی دی ہوئی ہے۔ میڈیا میں گفتگو کرتے ہوئے سابق صدر پرویز مشرف کا کہناتھاکہ میں نے کوئی طوفان کھڑا کرنے والی بات نہیں کی بلکہ طوفان تو منافق لوگ کھڑا کر رہے ہیں۔میں نے مدد کرنے والے کا نام لے کر کوئی احسان فراموشی نہیں کی ہے بلکہ میں ان کا شکر گزار ہوں مگر ان لوگوں نے کسی کی نیک کو بیان کر نا احسان فراموشی بنا دی ہوئی ہے ،اگر کسی نے میری مدد کی تو عوام خوش ہوئی ہے۔سندھ ہائی کورٹ نے 2014 میں ای سی ایل سے ہٹانے کا حکم دیا لیکن عملدرآمد نہیں کیا گیا،پھراچانک باہر جانے کی اجازت دیدی گئی ،ظاہر ہے اس کے پیچھے کوئی طاقت تھی۔ایم کیو ایم میں شمولیت سے متعلق انہوں نے کہا ہے کہ میں نیشنل لیول کا آدمی ہوں اورایم کیو ایم جا کر خود کو ایک سیٹ کی خاطر نچلے درجے میں نہیں لاسکتا۔ سربرا ہ آل مسلم لیگ نے بینظیر قتل سے متعلق اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ بی بی کے قتل میں بیت اللہ محسودملوث تھا،میرے باہر جانے کے دوسال بعد کیس شروع ہوا، میں اپنی صحت کیلئے باہر گیاتھااور اب میری صحت بہتر ہے ، میرے خلاف تمام کیسز بے بنیاد اور زبردستی فائل کئے گئے ہیں۔بینظیرکیس میں مجھے کوئی مسئلہ نہیں ہے،عدالت آنے کو بھی تیار ہوں فیصلہ تو دیں۔ انہوں نے کہا کہ بینظیر کو گاڑی میں ٹیلیفون کالز جس نے کی تھی وہ 2سال بعد ملا اور حیرت کی بات ہے کہ جب حملہ ہوارحمان ملک وہاں سے کس طرح چلے گئے۔قتل کیس کی تفتیش میں پیپلزپارٹی کو بھی شامل تفتیش کیا جائے اور بی بی کے مارے جانے سے سب سے زیادہ جس کو فائدہ ہوا اسے تفتیش کے دائرہ کار میں لایا جائے۔آخر میں انہوں نے کارگل سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ کمیشن بنائیں اور کارگل کی سچائی سامنے لائیں ہم نے تاریخ میں پہلی بار انڈیا کو گلے سے پکڑ لیا تھا ، اس کے بعد ان کے ملک میں بڑے بڑے جنرلز کے کورٹ مارشل کئے گئے۔لیکن مجھے سمجھ نہیں آتی کہ ہمارے ملک میں چھوٹا کیوں دکھا یا جاتا ہے:۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *