بدقسمت شہزادی سیتا وائٹ اور عمران خان کی کہانی۔۔۔۔۔۔۔۔ قسط نمبر 11

 بشکریہ وینیٹی فیئر میگزین نیویارکsita white

سیکس بیز متعدد مقدمات میں ملوث رہا ہے۔رچرڈ ، کی سٹون انرجی سروسز کارپوریشن کا چیف ایگزیکٹو اوفیسر تھا۔ یہ کمپنی الیکٹرک سروسز فراہم کرتی ہے۔یہاں اس پر الزام لگا کہ اس نے اپنے سٹاک کی ٹریڈنگ کی قیمت بڑھا دی تھی، جس کے نتیجے میں مقدمہ کرنے والے سٹاک ہولڈروں نے فیصلہ کیا کہ وہ معاملے کو مزید آگے نہیں بڑھائیں گے کیونکہ ان کی جانب سے اپنی نمائندگی کیلئے ہائر کردہ وکیل، لوینل گلانسی کے مطابق، ’’کوئی یقین دہانی نہیں کرائی جا سکتی تھی کیونکہ اب اس کے پاس کسی کو کچھ دینے کیلئے بچا ہی نہیں تھا۔ ‘‘ تاہم سیکس بیز سے جب ہم نے اس بارے میں اپنے تاثرات دینے کو کہا تو انہوں نے کوئی جواب نہ دیا۔ وکٹوریہ کی جانب سے تعارف کروایا جانے کے بعد، سیکس بیز اور سیتاناقابل بیان رفتار سے اتنے قریب آگئے کہ انہیں علیحدہ کرنا ناممکن نظر آنے لگا۔ کیرولینا نے نہایت روایتی منی منجمنٹ کمپنیوں سے رابطہ کیا۔تاکہ ان سے یہ معلوم کر سکے کہ وہ اپنے 3ملین ڈالر سے کیا کام کرے؟
یہاں تک کہ سیتا اور کیرولینا نے لوکاس کے خلاف ایک مشترکہ رٹ بھی دائر کر دے۔ ان دونوں کا ایک دوسرے سے رشتہ بھی اتار چڑھاؤ کا شکار رہتا۔دراصل، کیرولینا، جو اب نہایت اطمینان سے وسطی کیلی فورنیا میں ایک فارم ہاؤس میں رہتی ہے، نے اپنے ایک دوست کو بتایا تھا کہ اس نے اور سیتانے، سیتا کی موت سے صرف ایک ماہ قبل مصالحت کی تھی۔
فروری میں، سیتا اور کیمرون سیکس بی نے لاس انجلس میں الزبتھ نکسن،ماہرِ امورِ اسٹیٹ پلاننگ کے دفتر کا دورہ کیا۔اس 36سالہ سرخ بالوں والی منہ پھٹ وکیل کے یہاں ان کے جانے کا مقصد سیتا کی نصیحت تیار کرانا اور سیتا کیلئے ایک ٹرسٹ قائم کرنا تھا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *