فروری میں پیدا ہونے والے افراد

Afshan Huma

"فروری میں پیدا ہونے والے افراد بہت تخلیقی ہوتے ہیں ۔ان افراد کے بہت سارے دوست ہوتے ہیں اور ان کو دوست بنانے کے شوق بھی ہوتا ہے۔ یہ افراد جذبات کے اظہار بہت اچھے سے کرتے ہیں۔"جب  میں نے آج سوچا کہ اس موضوع پر لکھا جائے تو ساتھ ہی اس نیت سے کہ کچھ تحقیق کر لی جائے یہ جملہ " فروری میں پیدا ہونے والے افراد" گوگل پر ڈالا۔ پس ثابت ہوا کہ گوگل پر موجود ہر بات مستند نہیں ہوتی۔ اوپر کی عبارت میں صرف پہلے جملے سے میں متفق ہوں اور پھر باقی کہ تمام جملے میرے خیال میں کسی ایسے شخص نے لکھیں ہیں جو فروری میں پیدا ہونے والے لوگوں سے کم ملا ہے۔ میری زندگی میں بہت قریب ترین لوگوں میں سے چند افراد فروری کے ماہ میں پیدا ہوئے ہیں۔ ان میں سے ایک میری مرحومہ والدہ بھی تھِیں۔ آٹھ فروری کو ان کی سالگرہ ہے۔ اسی لیے سوچا آج کی تحریر ایک بار پھر ان ہی کے حوالے سے لکھوں۔ فروری میں پیدا ہونے والے افراد تخلیقی ہوتے ہیں اس سے تو مجھے مکمل اتفاق ہے لیکن یہ کہ ان کے بہت سے دوست ہوتے ہیں یہ میرے تجربات کی روشنی میں سراسر غلط ہے۔ فروری کے ماہ میں پیدا ہونے والے افراد دوستی کے معاملہ میں نہایت احتیاط سے کام لیتے ہیں ان کا ماننا ہوتا ہے کہ "دوست ہوتا نہیں ہر ہاتھ ملانے والا"۔ یہ انتہائی مخلص لوگ ہوتے ہیں اس لیے اپنی زندگی میں بہت جلد ہی لوگوں سے نقصان اٹھا بیٹھنے کے بعد اس نتیجہ پر پہنچ جاتے ہیں کہ لوگوں سے خوش اخلاقی سے ملا جائے لیکن انہیں دوستی کا درجہ بہت جانچ پھٹک کر دیا جائے۔ ہاں جنہیں یہ دوست کا درجہ دے دیتے ہیں وہ ان کے دل میں ہمیشہ رہتا ہے ۔

فروری میں پیدا ہونے والے جتنے بھی افراد میری زندگی میں آئے ہیں میں نے ان میں ایک اور امر مشترک پایا ہے اور وہ یہ کہ یہ انتہائی منطقی سوچ رکھتے ہیں۔ یہ جزبات کی رو میں نہیں بہہ جاتے اور یہ ہی ان کی کامیابی کا سبب ہے۔ ان کے انتہائی اہم فیصلے بہترین سوچ بچار کا نتیجہ ہوتے ہیں۔ نہ تو فیصلہ کرنے میں بہت دیر کرتے ہیں نا ہی بہت جلدی۔ لیکن کسی انسان کو یہ اجازت نہیں دیتے کہ وہ بلا وجہ ان کی ذاتی زندگی یا فیصلوں میں دخل اندازی کرے۔ ان کی زندگی میں ایک مخصوص حلقہ احباب رہتا ہے اور وہ صرف ان ہی لوگوں سے مشورہ کرتے اور ان کی مانتے بھی ہیں۔ ان کی زندگی کا ہر نیا دور گزشتہ دور سے سیکھے ہوئے اسباق پر مربوط ہوتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ وہ عمر کے ساتھ ساتھ پختگی کی تمام منازل بخوبی طے کرتے جاتے ہیں۔ ان کی ہنسی، ان کا غصہ اور ان کا ہر جذبہ ایک جچے تلے طریق سے ظاہر ہوتے ہے۔ وہ کبھی آپے سے باہر نہیں ہوتے اور نہ آپے سے باہر ہوتے ہوے لوگوں کی موجودگی میں ذیادہ دیر رہ پاتے ہیں۔ ان کے معیار زندگی میانہ روی کی بنیاد پر قائم ہوتے ہیں۔

فروری میں پیدا ہونے والے لوگوں کی سب سے بڑی کمزوری یہ ہے کہ ان کا چہرہ ان کی سوچ اور جزبات کی بھرپور عکاسی کر ڈالتا ہے۔ وہ لاکھ چاہنے کے باوجود بھی اپنی ناگواری اور غم و غصہ چھپا نہیں پاتے۔ ان کے پاس اظہار لے لفظوں کی کمی ہوتی ہے لیکن ان کے چہرے اور آنکھیں اس کمی کو پورا کر ڈالتے ہیں۔ یہ وہ لوگ ہیں جو صحیح کو صحیح اور غلط کو غلط مانتے ہیں، لیکن ان کی کمال بات یہ ہے کہ یہ اپنی سوچ کسی پر مسلط نہیں کرتے نہ ہی یہ کسی کی سوچ خود پر مسلط ہونے دیتے ہیں۔

فروری میں پیدا ہونے والے افراد میں سے ایک میرا بھائی بھی ہے۔ یہ وہ شخص ہے جس سے بلا شبہ میں زندگی میں بے حد مانوس رہی۔ میں نے اس بھائی کے ساتھ ہنسنا اور بولنا سیکھا۔ ایک خصوصیت جو اسے تمام خاندان میں ہمیشہ مشہورلیے رہی  وہ ہے اس کا مثالی کردار۔ وہ کہتا ہے کہ اپنی بچیوں کی تربیت کا اس کے پاس ایک ہی طریقہ ہے اور وہ یہ کہ وہ ایک مثالی کردار بنے اور اس کی اولاد اس کو دیکھ کر سیکھے۔ میری والدہ نے بھی کم و بیش یہی طریقہ اپنائے رکھا۔ وہ جس بات میں مجھے کہا کرتی تھیں تم نے کبھی مجھے ایسے کرتے دیکھا ہے؟ تو میں خا موش ہو کر رہ جاتی۔ تربیت کا یہ بہترین طریقہ تھا جو انہوں نے بھی اپنا رکھا تھا۔ ایک بات جو وہ بار بار سکھاتی رہیں وہ یہ تھی کہ کبھی کسی کو نقصان مت پہنچانا اور اگر ہو سکے تو اپنے آس پاس کے لوگوں کو فائدہ دینا، مذہب اس سے ذیادہ کچھ نہیں مانگتا۔

آج میرے دوستوں کی فہرست میں بھی چند ایسے نام ہیں جو فروری کی پیدائش ہیں اور میں خود کو خوش قسمت سمجھتی ہوں کہ میں ایسے ہیرا لوگوں میں رہتی رہی ہوں اور ان سے بہت کچھ سیکھ رہی ہوں۔ اللہ ہم سب کو بہترین کردار اور صفات کا مالک بنائے رکھے اور ہم سب کے بھرم رکھے۔ آمین

 

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *