فیصل آباد میں پرتشدد مظاہرے، فائرنگ سے پی ٹی آئی کارکن جاں بحق

PTI-vs-PMLN1تحریک انصاف کے ” سی پلان” کے تحت فیصل آباد میں انتخابی  دھاندلی کے خلاف شدید احتجاج کیا جارہا ہے جب کہ احتجاج کے دوران فائرنگ سے زخمی ہونے والا ایک پی ٹی آئی کارکن دم توڑ گیا جب کہ ایک کی حالت تشویشناک ہے۔
اطلاعات کے مطابق تحریک انصاف کی جانب سے انتخابی دھاندلی کے خلاف شہر کے 9 مختلف مقامات پراحتجاج کیا جارہا ہے جبکہ ناولٹی پل، گھنٹہ گھر چوک ، الائیڈ چوک اور ملت چوک میدان جنگ بنارہا اور وہاں تحریک انصاف اور مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں نے ایک دوسرے پر پتھراؤ کیا اور تصادم کے دوران ایک دوسرے کے کپڑے بھی پھاڑ دیئے جب کہ کشیدہ صورتحال کے پیش نظرمظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے انتظامیہ نے واٹر کینن کا بھی استعمال کیا تاہم اس موقع پرسادہ کپڑوں میں ملبوس شخص کی جانب سے فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں 3 کارکن زخمی ہوگئے جنہیں الائیڈ اسپتال منتقل کیا گیا جہاں 23 سالہ اصغرعلی دوران علاج دم توڑ گیا جب کہ ایک زخمی کی حالت بدستور تشویشناک ہے۔
پہلے مرحلے میں پی ٹی آئی کارکنان ملت چوک میں جمع ہوئے جہاں انہوں نے ٹائرجلا کر احتجاج کیا اور سڑک بلاک کردی تاہم اس موقع پر مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کی بھی بڑی تعداد پہنچ گئی اور پی ٹی آئی کے بینرز پھاڑ دیئے، دونوں جماعتوں کے کارکنان کے درمیان تلخ کلامی اور ہاتھا پائی بھی ہوئی تاہم مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے انتظامیہ کی جانب سے واٹر کینن کا استعمال کیا گیا جس پر پی ٹی آئی کارکنان شدید مشتعل ہوگئے اور انہوں نے واٹر کینن پر بھی پتھراؤ شروع کردیا۔ الائیڈ چوک پر پی ٹی آئی خواتین ورکرز نے احتجاج کیا اور وہیں دھرنا دے کر بیٹھ گئیں۔ اس موقع پر پی ٹی آئی کارکنوں کی جانب سے “گو نواز گو” اور (ن) لیگی کارکنوں نے “رو عمران رو” کے شدید نعرے لگائے، احتجاجی کارکنوں نے سمندری روڈ، عبداللہ پور چوک کو بھی بلاک کردیا جہاں وقفے وقفے سے دونوں سیاسی جماعتوں کے کارکنان آمنے سامنے آتے رہے۔
دوسری جانب چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ دوپہر ساڑھے تین بجے گھنٹہ گھر چوک پہنچوں گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *