پاکستان میں غیرت کے نام پر ایک اور لڑکی جان سے چلی گئی

اسلام آبادhonour killing

گولڑا کے علاقے میں ایک سنگدل باپ نے اپنی ہی 16 سالہ بیٹی کوایک لڑکے کے عشق میں مبتلا ہونے کے شبہ پر موت کے گھاٹ اتار دیا۔ باپ نے بیٹی کو قتل کرنے کے لیے اس کا گلا اور منہ دبوچ لیا اور دم گھٹنے کی وجہ سے لڑکی موت کے منہ میں چلی گئی۔ ملزم نے واقعہ کے بعد خود ہی پولیس کو فون کر کے اپنے جرم کا اعتراف کر لیا۔

تحقیقی افسر نے ایکسریس ٹریبیون کو بتایا کہ ملزم 6 بچوں کا باپ ہے  اور اس نے بچی کو خود قتل کرنے اعتراف کیا ہے۔ مقتول کی میت پمز ہسپتال میں منتقل کر دی گئی ہے۔ ڈاکٹرز نے لڑکی کی دم گھٹنے سے موت کی تصدیق کر دی ہے۔ لڑکی کے گلے پر زخم کے نشانات تھے اور ا سکے ہونٹوں سے بھی خون بہہ رہا تھا۔ ڈاکٹرز نے لڑکی کے پیٹ ، کلیجہ اور تلی کے نمونے بھی لے لیے ہیں۔  اس سے قبل پیر کے دن لاہور کی ایک بیوٹی سیلون میں کام کرنے والی لڑکی کو بھی بد چلنی کے شبہ میں  اس کے سسرال والوں نے موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔ مقتولہ چونگی امر سدھو کے قریب  ایک بیوٹی پارلر چلا رہی تھی اور اس کا نام فرزانہ بی بی تھا۔ 

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *