پالتو جانور کی موجودگی میں بچے صحت مند ہوتے ہیں ، ریسرچ

10

البرٹا ۔ کینیڈین ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر آپ اپنے بچوں کو صحت مند رکھنا چاہتے ہیں تو بہتر ہے کہ کوئی جانور پال لیں اور اگر وہ پالتو جانور کوئی کتا ہو تو اور بھی اچھا ہے۔

یونیورسٹی آف البرٹا میں بچوں کے امراض کے ماہرین نے تین سال کے دوران 746 نوزائیدہ بچوں، ان کے والدین اور گھر کے ماحول کا تفصیلی مطالعہ کیا جس میں خاص طور پر دو اقسام کے ’’مفید جرثوموں‘‘ کے علاوہ ان بچوں اور ان کے گھروں میں صحت کی عمومی کیفیات کا بھی جائزہ لیا گیا۔

مطالعے کے بعد ماہرین کو معلوم ہوا کہ جن گھروں میں بال دار کھال والا کم از کم ایک جانور (بطورِ خاص کتا) پلا ہوا تھا وہاں مفید جرثوموں کی تعداد زیادہ تھی جب کہ اہلِ خانہ کے بیمار پڑنے کا تناسب بھی ایسے گھروں کے مقابلے میں بہت کم تھا جہاں کوئی پالتو جانور موجود نہیں تھا۔ صحت پر پالتو جانوروں کے مفید اثرات چھوٹی عمر کے بچوں پر سب سے نمایاں دیکھے گئے جو ایک طرف مختلف بیماریوں سے زیادہ محفوظ رہے جب کہ دوسری طرف ان کا موٹاپا بھی کنٹرول میں رہا۔

ماہرین کا کہنا ہےکہ پالتو جانوروں میں موجود مفید جراثیم کے علاوہ ان کے ساتھ کھیلنے کودنے سے بھی بچوں کی صحت اس طرح بہتر رہتی ہے کہ وہ دن کا کچھ نہ کچھ حصہ بھاگ دوڑ اور جسمانی سرگرمی میں مصروف رہتے ہیں جس سے وہ موٹے نہیں ہوتے جب کہ پالتو جانوروں سے قربت بھی ان میں تنہائی کا احساس ختم کرتے ہوئے ذہنی طور پر انہیں صحت مند رکھتی ہے۔

اگرچہ ایسا ہی ایک مطالعہ 4 سال پہلے کیا گیا تھا لیکن اس میں صرف 24 بچے شریک کیے گئے تھے۔ اس تحقیق کے نتائج ریسرچ جرنل ’’مائیکروبایوم‘‘ میں شائع ہوئے ہیں:۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *