افغانستان میں ڈرون حملے شہری اموات کا سب سے بڑا سبب بنے: امریکی فوجی مشیر

 Droneایک امریکی فوجی مشیرنے ایک تحقیق کی ہے جس سے معلوم ہوا ہے کہ امریکہ کی افغان جنگ کے 13برسوں میں سے صرف ایک برس کے دوران ہونے والے ڈرون حملوں نے پائلٹ والے جہازوں کے مجموعی حملوں سے دس گنا زیادہ عام شہریوں کا قتل عام کیا۔ڈرون حملوں کے ذریعے کثیر ہلاکتوں کا یہ زمانہ 2010ء کے وسط سے شروع ہو تا ہے اور2011ء کے وسط تک جاتا ہے۔ یاد رہے کہ یہ وہی دور ہے کہ جس میں فضائی حملوں کے ذریعے شہری ہلاکتوں میں کمی کیلئے جنرل سٹینلے مک کرسٹل نے متعدد اقدامات اٹھانے کا اعلان کیا تھا۔ اور اس کا الٹا نتیجہ یہ نکلا تھا کہ ڈرون حملوں کی تعداد میں ڈرامائی اضافہ ہو گیا تھا۔
اس مفصل تحقیق کا عنوان ہے:
’’ڈرون حملے: شہری ہلاکتوں کے نقصانات‘‘
اور 18جون کو شائع ہونے والی اس سمری کے علاوہ باقی ساری رپورٹ تاحال خفیہ رکھی گئی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *