بوڑھے لوگ اگر روزہ نہیں رکھ سکتے تو انہیں کیا کرنا چاہئیے ؟

images

شیخ فانی ایک فقہی اصطلاح ہے، جو ایسے بوڑھے مر د یا بوڑھی عورت کے لیے استعمال ہوتی ہے جو عمرکے ایسے حصے میں پہنچ گئے ہوں کہ روز بروز ان کی کمزوری میں اضافہ ہی ہوتا جاتا ہو، ایسا شخص جب روزہ رکھنے سے عاجز ہو‘ یعنی نہ اب رکھ سکتا ہے، نہ آئندہ اس میں اتنی طاقت آنے کی امید ہے کہ وہ روزہ رکھ سکے ‘ تواسے روزہ نہ رکھنے کی اجازت ہے اور ہر روزے کے بدلے فدیہ دینے کا حکم ہے ۔

٭… اگر کوئی شیخ فانی گرمیوں میں گرمی کی شدت کی وجہ سے روزہ نہیں رکھ سکتا ‘مگر سردیوں میں روزہ رکھنے کی قدرت رکھتا ہے تووہ ماہِ رمضان کے روزے افطار کرے اور ان روزوں کی سردیوں میں قضاکرے،اس صورت میں ر وزوں کا فدیہ قابلِ قبول نہیں ہوگا۔

٭… اگر کوئی شیخ فانی روزے کی طاقت نہیں رکھتا تھا اور اس نے اپنے روزوں کا فدیہ ادا کر دیا،کچھ عرصہ گزرنے کے بعد اس کی طاقت بحال ہو گئی تو اب اس کا فدیہ صدقہ شمار ہوگا اور وہ اپنے قضا شدہ روزوں کی قضا کرے گا۔

٭…  شیخ فانی کسی غریب مسکین کو رقم دے کر اس سے اپنے روزے نہیں رکھواسکتا ،اس لیے کہ روزہ‘ نماز کی طرح ایک بدنی عبادت ہے اور بدنی عبادت میں کوئی کسی کی نیابت نہیں کر سکتا:۔

بشکریہ :http://www.farooqia.com

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *