پاکستان کا وہ انوکھا گاﺅں جہاں ہندو روزے رکھتے ہیں اور مسلمان گائے ذبح نہیں کرتے

tharپاکستان کے خلاف عالمی میڈیا میں بے انتہا پروپیگنڈا کیا جاتا ہے اور اس ملک کو شدت پسندی کا گڑھ قرار دیا جاتا ہے مگر اسی ملک میں ایسے مناظر بھی نظر آتے ہیں جو رواداری اور برداشت کا اعلیٰ ترین نمونہ پیش کرتے ہیں۔
صحرائے تھرپارکر میں واقع مٹھی کا علاقہ بھی ایک ایسی ہی جگہ ہے جہاں ہندو اور مسلمان نصف دہائی سے مل جل کر نہایت پرامن اور خوشگوار زندگی گزاررہے ہیں۔ اخبار ”ڈان“ میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق مٹھی کے ہندو رمضان المبارک میں مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے روزے رکھتے ہیں اور جب محرم آتا ہے تو جلسے جلوس بھی منعقد کرتے ہیں۔ یہاں رہنے والے مسلمان بھی ہندو آبادی کے جذبات کا احترام کرتے ہوئے گائے ذبح نہیں کرتے اور ہندوﺅں کی دیگر رسوم و رواج کے بارے میں بھی مثالی برداشت اور رواداری کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ دیوالی کے تہوار پر مسلمان ہندوﺅں کو تحائف دیتے ہیں جبکہ عید کے تہوار پر ہندو مسلمانوں کو تحائف پیش کرتے ہیں۔ نماز کے وقت پر ہندو اپنے مندروں میں گھنٹیاں نہیں بجاتے ہیں جبکہ ہندوﺅں کی عبادت کے اوقات میں مسلمان بھی ان کے لئے قطعاً کوئی پریشانی پیدا نہیں کرتے۔ غرضیکہ یہ گاﺅں ہندو مسلم اتحاد کا انتہائی دلچسپ اور خوشگوار منظر پیش کرتا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *