سانحہ ماڈل ٹاؤن: وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف جے آئی ٹی کےسامنےپیش،بیان ریکارڈکرادیا

shahbaz sharifوزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم کے سامنے پیش ہوکر اپنا بیان قلمبند کرا دیا۔
وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف اپنا بیان قلمبند کرانے خود جے آئی ٹی کے دفتر پہنچے، اور بیان ریکارڈ کرایا، اپنے بیان میں وزیراعلیٰ پنجاب نے مؤٴٴقف اختیار کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کو علم واقعہ کی صبح نو بجے ہوا، مجھے سمیت کسی اعلیٰ عہدے دار کی جانب سے پولیس یا کسی اور کو طاقت کے استعمال کا حکم نہیں دیا تھا۔
بیان میں خادم اعلیٰ کا مزید کہنا تھا کہ سترہ جون کو ماڈل ٹاؤن میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے آپریشن کیا گیا، اس حوالے سے کوئی معلومات نہیں، تاہم انہوں نے پولیس کو فائرنگ کے احکامات نہیں دیئے۔
ان کا کہنا تھا کہ سانحہ سے میرا کوئی براہ راست تعلق نہیں، واقعہ کاعلم نو بجے ہوا، جس کے بعد سیکریٹری کو سانحہ سے متعلق پوری طرح آگاہ کرنے کی ہدایات دیں، میں حلفایہ کہتا ہوں کہ کسی نے پویس کو طاقت کے استعمال کا حکم نیں دیا گیا تھا، یہ ایک فرضی بات ہے کہ میں نے بیرئیئر ہٹانے کا حکم دیا اور مجھے آپریشن کا علم تھا، یہ سارا معاملہ پولیس کا ہے اور پولیس کے خلاف ہی مقدمے بنتا ہے۔
واضح رہے کہ سترہ جون 2014 کو تحریک منہاج القرآن کے سربراہ ڈاکٹرطاہرالقادری کی رہائش گاہ کے باہر سے لگے بیرئر ہٹانے کیلئے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے آپریشن کیا گیا تھا، آپریشن کے دوران مزاحمت پر پولیس کی فائرنگ سے منہاج القرآن کے چودہ کارکن جاں بحق، جب کہ اسی سے زائد افراد شدید زخمی ہوئے تھے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *