تحریک انصاف کی پارلیمان میں واپسی کمیشن کے نوٹیفکیشن سے مشروط

imran khanپاکستان تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ انتخابات میں دھاندلی کی تحقیقات کے معاملے پر حکومت کے ساتھ تمام معاملات طے ہو گئے ہیں لیکن قومی اسمبلی میں واپسی کا فیصلہ عدالتی کمیشن کے نوٹیفکیشن کے بعد کیا جائے گا۔
اس بات کا فیصلہ اتوار کو تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کی قیادت میں اسلام آباد میں ہونے والے کور کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا۔ اجلاس تمام پارٹی عہدے تحلیل کرنے اور دوبارہ انتخابات کروانے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔
کور کمیٹی کے اجلاس کے بعد تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی نے ذرائع ابلاغ سے بات چیت میں بتایا کہ پی ٹی آئی ملک میں جمہوریت کو مستحکم کرنا چاہتی ہے اور شفاف انتخابات سے جمہوریت مضبوط ہو گی۔ انھوں نے کہا کہ’جوڈیشل کمیشن کی ہماری ڈیمانڈ پوری ہو گئی ہے۔ اسمبلیوں میں واپس جانے کا حتمیٰ فیصلہ کمیشن کے نوٹیفکیشن کے بعد ہی کیا جائے گا۔‘
شاہ محمود قریشی نے کہا ’حکومت اور تحریک انصاف کے درمیان جوڈیشل کمیشن کی تشکیل کے کئی معاملات گزشتہ سال دسمبر تک طے پا گئے تھے، صرف کمیشن کے ٹرم آف ریفرنس پر اختلاف تھا جو اب ختم ہو گیا ہے۔ مسلم لیگ نواز اور پی ٹی آئی کے درمیان ہونے والے معاہدے کو تمام پارلیمانی جماعتوں کی حمایت حاصل ہوئی ہے۔
یاد رہے کہ 20 مارچ کی شام پی ٹی آئی اور وفاقی حکومت نے 2013 کے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کرنے کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے پر اتفاق کر لیا تھا اور دھاندلی کی تحقیقات کے لیے عام انتخابات 2013 کی تحقیقاتی کمیشن آرڈینیس 2014 جاری کیا گیا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *