زیادہ خوشی میں آنسو کیوں آجاتے ہیں؟ تازہ تحقیق

Cristiano Ronaldo's girlfriend wept with delight as she was revealed as the 2011 covergirl for Sports Illustrated's swimsuit issue. Irina Shayk wiped away tears as the prestigious magazine cover was unveiled during David Letterman's US chat show. Blowing kisses to the camera and grinning from ear to ear, the Russian beauty certainly seemed happy with her beach photoshoot. She beat off competition from nine other models to land the coveted cover spot. Pictured: Irina Shayk Ref: SPL249009 150211 Picture by: CBS/Splash News Splash News and Pictures Los Angeles: 310-821-2666 New York: 212-619-2666 London: 870-934-2666 photodesk@splashnews.com Splash News and Picture Agency does not claim any Copyright or License in the attached material. Any downloading fees charged by Splash are for Splash's services only, and do not, nor are they intended to, convey to the user any Copyright or License in the material. By publishing this

اکثر خوشی کے موقع پر ہنسنے یا قہقہہ لگانے کے بعد ہماری آنکھوں سے آنسو رواں ہو جاتے ہیں۔ ہم نے کبھی یہ سوچا کہ خوشی اور مسرت کے وقت یہ آنسو کیوں آتے ہیں جب کہ ہم جانتے ہیں کہ آنسوؤں کا تعلق تو غم اور رنجیدگی کے ساتھ ہوتا ہے۔بعض تحقیقی مطالعوں کے مطابق فرطِ مسرّت سے رو پڑنا، یہ وہ طریقہ ہے جو ہمارا جسم انتہائی شدید اور طاقت ور جذبات کے دھارے سے گریز کے واسطے اپناتا ہے۔ دیگر لفظوں میں ہم کہہ سکتے ہیں کہ یہ ایک ہی وقت میں مثبت اور طاقت ور جذبات کا منفی رد عمل ہوتا ہے تاکہ ضرورت کے مطابق جذبات کا توازن برقرار رہے۔اس تفصیل کے باوجود "خوشی کے آنسوؤں" کا رجحان اپنی نوعیت کا ایک منفرد مظہر ہے۔ ایک امریکی یونی ورسٹی کی ماہر نفسیات اور محققہ اوریانا ایراگون کا کہنا ہے کہ اس لمحے انسان درحقیقت اپنے جذبات کے متضاد کام کر رہا ہوتا ہے۔مذکورہ ڈاکٹر نے اس حوالے سے ایک تحقیقی مطالعہ کیا تھا جس کے نتائج دو برس قبل امریکی مجلے "سائیکولوجیکل سائنس" میں شائع ہوئے۔ اس مطالعے کے مطابق انسان کی جانب سے یہ "دُہرا اظہار" اس وقت سامنے آتا ہے جب اس پر طاقت ور قسم کے جذبات غالب آ جاتے ہیں خواہ یہ جذبات مثبت ہوں یا منفی۔تحقیق میں مزید کہا گیا کہ "خوشی کے آنسو" وہ لا شعوری طریقہ کار ہے جس کا سہارا انسانی جسم انتہائی مسرت کے حالات میں لیتا ہے تا کہ انسان کی نفسیاتی حالت دوبارہ سے متوازن ہو سکے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *