چہرے کی شناخت چھپانا اب مشکل، زبردست کامیابی مل گئی!

یونیورسٹی آف کیمبرج کے ماہرین نے نقاب میں بھی چہرہ شناخت کرنے والا سافٹ ویئر بنایا ہے۔ فوٹو: فائل

کیمبرج -یونیورسٹی آف کیمرج کے ماہرین نے چہرہ شناخت کرنے والی انقلابی ٹیکنالوجی وضع کی ہے جس کے ذریعے نقاب اوڑھے اور میک اپ کرکے حلیہ بدلنے والے افراد بھی شناخت کیے جاسکتے ہیں۔

یہ سسٹم ڈھاٹا باندھنے، ٹوپی پہنے اور عینک لگائے افراد کی بہ آسانی شناخت کرسکتا ہے اور اس میں بہت زیادہ وقت نہیں لگتا۔ اس کا الگورتھم امرجوت سنگھ اور ان کے ساتھیوں نے لکھا ہے۔ انہوں نے مشین لرننگ عمل کے تحت ایک سافٹ ویئر بنایا ہے جوچہرے کے 14 اہم مقامات کو نوٹ کرتا ہے اور یہ وہی مقامات ہیں جو ہم کسی کا چہرہ دیکھتے ہوئے نوٹ کرتے ہیں۔

سائنسدانوں نے پہلے لوگوں کے صاف چہرے کمپیوٹر میں فیڈ کئے اور اس کے بعد 2000 سے زائد تصاویر کو دکھایا گیا جن میں لوگوں کو عینک، نقلی ڈاڑھی، ٹوپی ، ہیٹ پہنانے کے علاوہ ان کے نصف چہرے بھی دکھائے گئے۔ کمپیوٹر الگورتھم کو تربیت دی گئی کہ وہ چہرے کو پہچاننے کے اہم نقاط کو نوٹ کرسکے۔ الگورتھم نے نقاب سے پہلے اور نقاب کے بعد چہرہ پہچاننے کی ٹریننگ لی اور اپنے آپ کو بہتر بناتا رہا۔

کمپیوٹر سسٹم نے اسکارف پہنے افراد کو 77 فیصد وقت میں، کیپ اور اسکارف پہنے چہروں کو 69 فیصد وقت میں اور اسکارف اور عینک پہنے چہروں کو مقررہ وقت کے 55 فیصد حصے میں پہچان لیا۔ اس طرح یہ دنیا کا پہلا پروگرام ہے جو چہرہ چھپانے پر بھی اس کو پہچاننے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

امرجوت سنگھ نے بتایا کہ پہلے سافٹ ویئر کو اصل چہرے کی ایک جھلک دکھادی جائے تو یہ چہرے کے اہم مقامات کو نوٹ کرکے اپنے پاس محفوظ رکھ لیتا ہے جن میں سے اکثریت منہ اور آنکھوں کے اطراف موجود ہوتےہیں۔ اس کے بعد وہ ان اہم اشاروں کو نوٹ کرلیتا ہے اور چہرے پر ان کی جگہ کو بھانپ لیتا ہے۔ اس کے بعد روپ بدلنے پر الگورتھم انہی نکات کو تلاش کرتا ہے۔ توقع ہے کہ اسے مزید بہتر بناکر حلیہ بدلنے والوں کو بہ آسانی پہچانا جاسکے گا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *