ہائی رسک ہنٹرز پاکستان کے سٹاک ایکسچینج میں انقلاب لانے میں کامیاب

fund

فسیح منگی

غیر ملکی انویسٹرز ایک بار پھر پاکستانی ایکوٹیز میں دلچسپی لینے لگے ہیں۔ گلوبل فنڈز نےجنوری میں اس ملک کے شئیر سے میں 91 ملین ڈالر کے شئیر خرید لیے ہیں۔ اور چار سال میں پہلی بار سب سے زیادہ مانانہ آمدن کا امکان پیدا کر دیا ہے۔ اس کی وجہ سے ہمارا کے ایس ای 100انڈیکس بھی بہتر ہو گیا ہے جو پچھلے سال بہت نیچے چلا گیا تھا اور دنیا کی سٹاک مارکیٹ میں ہماری پوزیشن سب سے خراب تھی۔  کراچی کی ٹنڈرا فونڈر اے بی کی ایک سینئر ایڈوائزر آہ سومرو نے کہا: اس کی وجہ ہائی رسک ہنٹرز ہیں جو سال کے شروع میں ہی داو لگانے کی ہمت دکھا رہے ہیں۔ ٹنڈرا فونڈر اے بھی نے اس سال پاکستان کے سٹاک میں سے ایک بڑا حصہ خریدا ہے۔ ایک بار پھر مارکیٹ میں تیزی آنے سے پاکستان میں ایک خوشگوار ماحول دیکھا جا سکتا ہے اگرچہ اس کو مکمل طور پر فائدہ مند قرار دینا قبل از وقت ہو گا۔ مارکیٹ ستاک میں رواں ہفتے 8 اعشاریہ 1 بلین ڈالر کی دولت جمع ہوئی جو تاریخ کا دوسرا بڑا مجموعہ ہے وار گلوبل اکنامک گروتھ میں ایک اہم حیثیت رکھتا ہے۔ اس بات کا انکشادف بینک آف امریکہ کے میرل لنچ نے اپنی ایک ریسرچ رپورٹ میں کیا ہے۔  سابقہ وزیر اعظم نواز شریف کی نا اہلی کے فیصلے کے بعد مارکیٹ کو 494 ملین ڈالر کا خسارہ برداشت کرنا پڑا تھا باوجود اس کے کہ حکومت کی تبدیلی جمہوریعمل کے تحت ہی پایہ تکمیل تک پہنچی تھی۔ اس کے بعد اکانومی کو بہتر کرنے کے
اقدامات اور روپے کی قیمت کم کرنے جیسی پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان میں فارین انویسٹ منٹ ایک بار پھر بڑھنے لگی ہے۔ ہیلسنکی کی ایف آئی ایم ایسٹ مینجمنٹ کی سربراہ ہرٹا الاوا کا کہنا ہے کہ پاکستان نے اپنی کرنسی کو پہلے ہی ڈی ویلیو کر دیا ہے اور مستقبل میں مزید ڈیلیو کی جانے کی توقع ہے لیکن اس بار زیادہ بڑی تبدیلی دیکھنے کونہیں ملے گی۔ مزید فنڈز بھی آنے کےلیے تیار ہیں اور اس کےلیے الیکشن کا انتظار کیا جا رہا
ہے کیونکہ کئی بار ہم نے دیکھا ہے کہ الیکشن کے نتائج حیران کن نکل آتے ہیں۔  اس سال آنے والے ان فلو میں سے نصف سے زیادہ انڈیکس ٹریکنگ فنڈز کے ذریعے آیا ہے اور باقی حصہ ان انویسٹرز کی طرف سے آیا ہے جو پہلے بھی پاکستانی سٹاک مارکیٹ میں کاروبار کرتے رہے ہیں۔ یہ بات آپٹیمس کیپیٹل مینجمنٹ پرائیویٹ لمٹڈ کے سربراہ اویس احسن نے بتائی۔ 2009 کے بعد 9 میں سے 7 سال میں کے ایس ای 100 انڈیکس میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے۔ اویس احسن نے مزید کہا: جب گلوبل انویسٹر کسی سٹاک مارکیٹ میں انویسٹ کرتے ہیں تو وہ ہمیشہ اس مارکیٹ سے جڑے رہتے ہیں

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *